جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

اینٹی کرپشن کورٹ نے پرویز الہٰی کو مقدمے سے بری کردیا

اینٹی کرپشن

لاہور: اینٹی کرپشن کورٹ نے پی ٹی آئی صدر پرویز الٰہی کو ترقیاتی منصوبوں میں کرپشن کے کیس سے ڈسچارج کردیا۔

اینٹی کرپشن پولیس سخت سکیورٹی میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کو لے کر ضلع کچہری پہنچی۔

دوران سماعت پرویز الٰہی کے وکیل ایڈووکیٹ رانا انتظار نے عدالت کو بتایا کہ تمام منصوبوں سے متعلق دستاویزات موجود ہیں جس پر عدالت نے واضح کیا کہ دلائل سننے کے بعد قانون کے مطابق فیصلہ کرنا ہے۔

رانا انتظار نے مؤقف اپنایا کہ 17 جنوری 2023 کو 36 کروڑ کی ادائیگی ہوئی اس وقت محسن نقوی وزیراعلیٰ تھے، اینٹی کرپشن کا افسر ٹیکنیکل انکوائری کر رہا ہے، اینٹی کرپشن والے نیا قانون لا رہے ہیں، جج بھی ان کا اپناہوا کرے گا، ٹیکنیکل رپورٹ ایس اینڈ ڈبلیو ہی تیار کر سکتا ہے۔

دلائل سننے کے بعد جج نے ریمارکس دیے کہ اینٹی کرپشن کی اپنی مرضی ہے جو مرضی کریں۔

یہ بھی پڑھیں: پی ٹی آئی کے لوگ حق اور سچ پر ہیں ،مضبوط رہیں پیچھے نہیں ہٹنا:پرویز الہٰی

دورانِ سماعت پراسیکیوشن کی جانب سے پرویز الٰہی کے ریمانڈ کی استدعا کی گئی جس پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کرلیا۔

عدالت نے بعد ازاں فیصلہ سناتے ہوئے پرویز الٰہی کو مقدمے سے بری کردیا اور کہا کہ پرویز الٰہی پر اگر کوئی اور مقدمہ نہیں ہے تو انہیں فوری رہا کیا جائے۔

متعلقہ خبریں