جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

آغا سراج درانی و دیگر کی درخواست ضمانت کی سماعت 17 ستمبر تک ملتوی

آغا سراج درانی

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت کی سماعت 17 ستمبر تک ملتوی کر دی گئی ہے۔

سندھ ہائی کورٹ نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی، مسیح الدین، گلزار، احمد اور دیگر کی درخواست ضمانت کی سماعت نیب ٹیم کے حج پر جانے کے باعث  17 ستمبر تک ملتوی کردی۔

دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ نیب تفتیشی ٹیم حج پر گئی ہے، جس پر عدالت نے استفسار کیا کہ حج آپریشن مکمل ہو چکا ہے، تو ابھی تک تفتیشی افسر واپس کیوں نہیں آیا؟

مزید پڑھیں : آصف زرداری اور فریال تالپر کے جوڈیشنل ریمانڈ میں 19 ستمبر تک توسیع

نیب پراسیکیوٹر نے جواب دیا کہ وہ مدینہ منورہ میں ہیں 14 ستمبر کو وطن واپس پہنچ جائیں گے۔ اس کے بعد عدالت نے تمام ملزمان کی درخواست ضمانت پر سماعت 17 ستمبر تک ملتوی کر دی۔

واضح رہے کہ اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کرپشن کے مقدمے میں جیل میں ہیں، جبکہ ملزم مسیح الدین، گلزار اور احمد دیگر نے عبوری ضمانت حاصل کر رکھی ہے۔

ملزمان کے خلاف ریفرنس احتساب عدالت میں زیر سماعت ہے۔ مئی میں قومی احتساب بیورو (نیب) نے آغا سراج درانی کے خلاف کراچی کی احتساب عدالت میں ریفرنس دائر کیا تھا، جس میں ان سمیت 20 ملزمان پر ایک ارب 60 کروڑ روپے کی بدعنوانی کا الزام عائد کیا۔

ریفرنس کے مطابق آغا سراج درانی نے ایک ارب 60 کروڑ روپے سے زائد کے اثاثے بنائے ہیں، جن میں سے انہوں نے کچھ جائیدادیں فروخت بھی کردی ہیں۔

آغا سراج درانی کے غیر قانونی اثاثہ جات میں گھر اور 35 گاڑیاں شامل ہیں، ان کے لاکر سے 350 تولہ سونا بھی برآمد ہوا تھا، ملزم اور دیگر اہلخانہ سے 11 کروڑ روپے کی قیمتی گھڑیاں بھی ریڈ کے دوران برآمد کی گئیں تھیں۔

ریفرنس کے مطابق اثاثوں میں 11 گاڑیاں، بیٹے، اہلیہ اور بیٹوں کے نام پر کراچی اور ایبٹ آباد میں جائیداد ہیں، جائیدادوں کی رقم کی ادائیگی ملازمین کے نام سے کی گئی۔

متعلقہ خبریں