امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو قید کی سزا کا امکان

جی ٹی وی نیوز، شعبہ انٹرنیشنل مانیٹرنگ ایند ریسرچ

سزا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو قید کی سزا سنائی جاسکتی ہے۔ ٹرمپ آرگنائزیشن کے خلاف، نیویارک ڈسٹرکٹ اٹارنی کی تحقیقات نئے مرحلے میں داخل ہوچکی ہے.

ٹرمپ کے سابق وکیل مائیکل کوہن سے اوٹس ول وفاقی جیل میں تفتیش کاروں نے پوچھ گچھ کی. ان کے وعدہ معاف گواہ بننے کا امکان بھی رد نہیں کیا جاسکتا ہے۔

صدر ٹرمپ ناخوشگوار سزائے قید کا سامنا کرسکتے ہیں کیونکہ نیویارک ڈسٹرکٹ اٹارنی آفس کی ٹرمپ آرگنائزیشن کے ریکارڈ سے متعلق تحقیقات نئے مرحلے میں داخل ہوچکی ہیں۔

سائرس وینس کی قیادت میں تفتیشی ٹیم نے ٹرمپ کے سابق قانونی معاون مائیکل کوہن سے اوٹس ول جیل میں پوچھ گچھ کی۔

کوہن کو پہلے ہی تین سال قید کی سزا سنائی جاچکی ہے، وہ اب تفتیش کاروں سے مکمل تعاون کررہے ہیں۔

کہا جارہا ہے کہ انہوں نے تفتیشی ادارے کے ساتھ تحریری معاہدہ کرلیا ہے۔ ان پر الزام ہے کہ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی مہم کے سلسلے میں فنڈز میں سے خطیر رقم دو خواتین کو منہ بند رکھنے کی قیمت کے طور پر ادا کی گئی۔

اسٹارمی ڈینیئلز اورکیرن میک ڈوگل نامی خواتین نے صدر ٹرمپ پر ناجائز جنسی تعلقات کے الزامات عائد کئے تھے۔

اسٹارمی کے ساتھ ایک لاکھ تیس ہزار ڈالر جبکہ کیرن کے ساتھ ڈیڑھ لاکھ ڈالر کا خفیہ معاہدہ کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : چار امریکی سینیٹرز کا مقبوضہ کشمیر میں جاری کرفیو ختم کرانے کے لیئے امریکی صدر کو خط

اسٹارمی کو ادائیگی ایک کنسلٹنٹ کمپنی کی جانب سے کی گئی تھی جو مائیکل کوہن نے اسی مقصد کے لئے قائم کی تھی  اور اسٹارمی کے ساتھ جو ڈیل کی جارہی تھی، اس کے مذاکراتی عمل میں ڈونلڈ ٹرمپ بذات خود شریک تھے۔

کیرن کو ڈیڑھ لاکھ ڈالر کی ادائیگی امیریکن میڈیا انکون کی جانب سے کی گئی تھی۔ سابق امریکی اٹارنی جوائس وینس نے کہا ہے کہ مائیکل کوہن سے تفتیش کے بعد امکان ہے کہ صدر ٹرمپ کو سزائے قید بھی سنائی جاسکتی ہے۔

نیویارک ریاست کے قانون میں کاروبار کا جھوٹا ریکارڈ پیش کرنا ایک چھوٹاجرم ہے لیکن کسی دوسرے جرم کو چھپانے کی کوشش میں جھوٹا کاروباری ریکارڈ پیش کرنا ایک بڑا جرم سمجھا جاتا ہے۔ اس لئے قانونی ماہرین کو امریکی صدر ٹرمپ پر سزائے قید کی تلوار لٹکتی نظر آرہی ہے۔

کچھ نہیں کہا جاسکتا کہ ریاست نیویارک کا قانون چلتا ہے یا ٹرمپ کے وکلاء کے دلائل ان کو سزا سے بچانے میں کامیاب ہوپاتے ہیں۔ اتنا ضرور ہے کہ مائیکل کوہن گھر کا بھیدی ہے، لنکا ڈھاسکتا ہے۔