جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

آل شریف اور آل فضل الرحمٰن نے لوٹ مار کا ماحول بنا رکھا تھا، فیاض الحسن

نواز شریف

لاہور: فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ اليکشن کميشن نہ کوئی ٹريبونل ہے اور نہ ہی عدالت، صرف سپريم کورٹ ہی کسی پارٹی پر پابندی لگانے کا حق ہے۔

پی ٹی آئی رہنماء اور صوبائی وزیر فياض الحسن چوہان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی پارٹی کی فارن فنڈنگ ثابت ہو جانے پر اس کا جرمانہ يہ ہے کہ اليکشن کميشن سارا پيسہ ضبط کرسکتا ہے، فارن فنڈنگ کيس سے کوئی طوفان نہيں آجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ميثاق جمہوريت مل کر کرپشن کرنے کيلئے کيا گيا ہے، پيپلزپارٹی کو پونے 4 لاکھ ڈالر فنڈز پاکستان ايمبيسی نے ديئے،اور ان کو فنڈنگ کرنے والے پاکستانی نہيں ہيں۔

فياض الحسن چوہان نے کہا کہ مسلم لیگ ن مسلسل جھوٹ بول رہی ہے، الیکشن کمیشن سیاسی جماعتوں کی تحقیقات کرسکتا ہے،حنیف عباسی بھی یہی کیس سپریم کورٹ لیکرگئےتھے۔

ان کا کہنا تھا کہ احسن اقبال کا دبئی ميں خاکروب کا اقامہ بنا ہوا ہے،احسن اقبال کے بھائی پر 100 کروڑ کی کرپشن کا الزام ہے،الزام لگانےوالے سوچيں کہ خود ان کا کردار کيا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آل شریف اور آل فضل الرحمٰن نے لوٹ مار کا ماحول بنا رکھا تھا، رادھا آؤ مل کر کھائیں آدھا آدھا، یہ تھا میثاق جمہوریت۔ پاکستان کی تمام ایجنسیوں کے پاس رپورٹس موجود ہیں پہلے روایت تھی کس لیڈر کو کتنے پیسے دے کر جتوایا جاتا تھا۔ تحریک انصاف نے پیسوں کی روایت ختم کی۔

انھوں نے دعویٰ کیا کہ پاکستان تحریک انصاف کو فنڈنگ کرنے والے تمام پاکستانی ہيں۔

فیاض الحسن نے پیپلز پارٹی کی فنڈنگز کی تفصیلات اور مسلم لیگ ن کے آڈیٹر کی رپورٹ دکھاتے ہوئے کہا کہ ان دونوں رپورٹس کی بنیاد پر فرخ حبیب نے الیکشن کمیشن میں کیس کیا ہے، اب کیسز چلیں گے اور فیصلہ ہوگا۔ ممنوعہ فنڈنگ ثابت ہونے سے اضافی پیسہ جمع کروانا ہوتا ہے پارٹی پر پابندی نہیں لگتی۔

متعلقہ خبریں