‘‘بیوی کسی حال میں خوش نہیں’’

عدنان ہاشمی

طلاق ایسا لفظ ہے کہ ہمارے معاشرے میں لوگ غلطی سے بھی لینا پسند نہیں کرتے ہیں۔ شادی کے بعد ہر لڑکی چاہتی ہے کہ اسے ایسا شوہر ملے جو اس کا اتنا خیال رکھے کے اسے میکے کی یاد نہ آئے۔ وہ گانا تو آپ نے سنا ہوگا کہ :

‘‘میکے کی تجھے نہ یاد آئے، سسرال سے اتنا پیار ملے’’

مگر متحدہ عرب امارات میں صورتحال اس سے مختلف ہے، چند روز قبل ایک خاتون نے شوہر سے اس بات پر طلاق لینا چاہی، کیونکہ اس خاتون کا شوہر بیوی کا بہت زیادہ خیال رکھتا ہے۔

بیوی کا کہنا تھا کہ میرا شوہر مجھ پر کبھی نہیں چیخا، وہ گھر کو صاف کرنے میں میری مدد کرتا ہے، میں اپنے شوہر کے ساتھ ناراضگی اختیار کرتی ہوں مگر میرا رومینٹک شوہر ہمیشہ مجھے معاف کردیتا ہے اور کئی تحائف دیتا ہے۔ میری زندگی جہنم بن گئی ہے۔

شوہر کا کہنا تھا میں نے کچھ غلط نہیں کیا، میں تو بس ایک پرفیکٹ شوہر بننا چاہتا تھا، میری بیوی نے شکایت کی کہ میرا وزن بڑھ رہا ہے تو میں فوراً ڈائٹ پر چلا گیا اور سخت ورزش کے باعث میری ٹانگ بھی ٹوٹ گئی تھی۔

شوہر نے عدالت سے درخواست کی کہ ان کی بیوی کو طلاق نہ لینے کا مشورہ دیں، شادی کے پہلے سال میں ہی شادی سے متعلق کوئی رائے قائم کرنا درست نہیں ہے۔ ہر کوئی اپنی غلطی سے سیکھتا ہے۔

عدالت نے میاں بیوی کو اپنے معاملات حل کرنے کے لیئے موقع دے دیا۔

اس خبر نے پاکستان سمیت دنیا بھر میں اپنی توجہ حاصل کی، سوشل میڈیا پر ہر شخص اس خبر کو شیئر کررہا ہے۔ چند دن گزر جانے کے باوجود اب تک اس خبر پر تبصرے ہورہے ہیں۔

اس خبر پر ہونے والے تبصروں میں ایک تبصرہ سب سے زیادہ عام ہے کہ :

‘‘بیوی کسی حال میں خوش نہیں’’

متحدہ عرب امارات میں اس سے قبل بھی طلاق کے انوکھے مطالبے سامنے آتے رہے ہیں، ایک امارتی خاتون نے شوہر سے برگر منگوایا جو وہ لانا بھول گیا، جس کے باعث خاتون نے عدالت میں خلع کی درخواست دے دی۔

ایک اور امارتی خاتون نے مشہور گیم پبجی کھیلنے سے منع کرنے پر شوہر سے طلاق لینے عدالت پہنچ گئی، جبکہ ابوظہبی کی خاتون نے شوہر سے تعلق اس وجہ سے ختم کرنا چاہا کیونکہ اس کا شوہر بہت کنجوس تھا۔

اور تو اور ایک اور واقعے میں امارتی خاتون نے اپنی سہیلیوں سے بات کرنے کے لیئے موبائل فون میں کریڈٹ نہ ڈالنے پر اپنے شوہر کو طلاق کے لیے عدالت پہنچا دیا۔

اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ امارتی خواتین اپنی چھوٹی چھوٹی خواہشات پر بھی حساس ہیں۔

پاکستان میں صورتحال اس طرح تو نہیں مگر شوہر پھر بھی خاندانی محفلوں میں بیوی کی شکایت کرتے نظر آتے ہیں، بظاہر وہ شکایت مذاق ہوتی ہے مگر دراصل وہ شوہر کی دل کی بات ہوتی ہے، اس مذاق میں اس شوہر کے دل کا حال چھپا ہوتا ہے، جو صرف ایک شادی شدہ مرد ہی سمجھ سکتا ہے۔