سیکورٹی حکام نے حراست میں لے لیا ہے، محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا جاوید کا دعویٰ

سرینگر : کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا جاوید نے دعویٰ کیا ہے کہ حکام نے انھیں بھی حراست میں لے لیا ہے۔

جموں اور کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کی التجا جاوید مفتی کا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد سے کشمیر میں ایک غیر انسانی اور بے مثال نوعیت کا بلیک آوٹ کیا جا چکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ کسی سیاسی جماعت سے منسلک نہیں ہیں اور ہمیشہ سے ایک قانون پسند شہری رہی ہیں۔ انہیں بھی حراست میں رکھا گیا ہے اور بتایا گیا ہے کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے میڈیا سے اس بارے میں بات کی ہے کہ کشمیریوں پر کیا گزر رہی ہے۔

التجا جاوید نے بھارت کے وزیرِ داخلہ امیت شاہ کو ایک خط بھی لکھا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ اُن کو بتایا جائے کہ انہیں کیوں حراست میں رکھا گیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں سخت ترین نتائج کی دھمکی بھی دی گئی ہے۔