شام میں ایک لاکھ سے زائد افراد زیر حراست اور لاپتہ ہیں : اقوام متحدہ

نیو یارک : اقوام متحدہ کی جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شام میں ایک لاکھ سے زائد افراد زیر حراست اور لاپتہ ہیں۔

اقوام متحدہ سے جاری رپورٹ کے مطابق شام میں آٹھ سالہ تنازع میں ایک لاکھ سے زائد افراد گرفتار، اغواء اور لاپتہ کئے گئے ہیں۔ اقوام متحدہ کی سیاسی سربراہ نے ان تمام حالات کا ذمہ دار حکومت کو ٹھہرایا ہے،

اقوام متحدہ کی سیاسی سربراہ روز میری ڈی کارلو نے اپنے ایک خطاب میں تمام سیاسی جماعتوں سے سیکیورٹی کونسل کے اس مطالبے پر توجہ دینے پر زور دیا، جس میں تمام زیرحراست افراد کو رہا کرنےاور بین الاقوامی قوانین کے تحت ان کی معلومات اہل خانہ کو فراہم کرنےکا کہا گیا ہے۔

روزمیری ڈی کارلو کا کہنا تھا کہ شام میں پائیدارامن کےحصول اور اسے برقرار رکھنے کے لیے بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پراحتساب کیا جائے۔

دوران اجلاس شامی قیدیوں کے لیے انصاف اور آزادی کے لیے مہم چلانے والی ڈاکٹر ہالا الغوی اور آمنہ خولانی نے جنگ کے خاتمے میں ناکامی پر کونسل کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تمام افراد کی شناخت اور مقام ظاہر کریں اور ان کو رہا کریں۔