عالمی برادری کو مسئلہ کشمیر سنجیدگی سے لینا چاہیے : امریکا میں پاکستانی سفیر

عالمی برادری

واشنگٹن : امریکا میں تعینات پاکستانی سفیر اسد مجید نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی المیہ جنم لے رہا ہے، عالمی برادری کو مسئلہ کشمیر پر سنجیدگی ظاہر کرنی چاہیے۔

امریکا میں تعینات پاکستان کے سفیر اسد مجید نے کہا ہے کہ جنرل اسمبلی کے آئندہ ماہ ہونے والے اجلاس میں عالمی برادری کے سامنے مسئلہ کشمیر کی سنگین نوعیت کو اجاگر کرنے کا بہترین موقع ہوگا۔

مزید پڑھیں : ملیحہ لودھی کی جنرل اسمبلی کی صدر سے ملاقات میں مقبوضہ کشمیر پر بریفنگ

واشنگٹن میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم اقوام متحدہ پر زور دیں گے کہ مسئلہ کشمیر پر توجہ مرکوز کی جائے۔

انہوں نے کہا عالمی برادری کو مسئلہ کشمیر سنجیدگی سے لینا چاہیے، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال امن اور سلامتی کے لیے سنگین خطرہ ہے۔ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں اقدامات کر کے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی بھی کی ہے۔

سفیر اسد مجید نے کہا اوور سیز پاکستانی امریکی ایوانوں میں مسئلہ کشمیر پر اپنا اثر و رسوخ استعمال کریں، پاکستانی اور کشمیریوں نے مسئلہ کشمیر پر بھارت کے خلاف دنیا بھر میں آواز اٹھائی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی خود مختاری پر وار کیا گیا تو ٹھوس جواب دیا جائے گا۔

اسد مجید نے تیرا اگست کو غیر ملکی نشریاتی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو میں بھارت کو دوٹوک پیغام دیتے ہوئے کہا تھا کہ مقبوضہ وادی میں اشیائے ضروریہ تک رسائی ختم کی گئی، پاکستان پہلے ہی باور کرواچکا ہے کہ سالمتی پر آنچ آئی تو جوابی کارروائی ضرور ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت کے یکطرفہ اقدام سے خطے کا امن متاثر ہوا ہے۔ گن پوائنٹ پر کشمیریوں کے معاشی تحفظات دور کرنے کی کوشش نا منظور ہے۔ اس بار بھارت سرحد پر دہشتگردی چھپا نہیں سکے گا۔

پاکستانی سفیر اسد مجید خان کا انٹرویو کے دوران مزید کہنا تھا کہ بھارت نے سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی کی۔ موجودہ صورتحال میں چین اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے گا۔ پاکستان ابتک بھارتی اشتعال انگیزی پر ذمہ داری کامظاہرہ کررہا ہے، لیکن ہماری تشویش کم نہیں ہوئی، اقوام متحدہ اورعالمی برادری صورتحال کا نوٹس لیں۔