جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

علی گنڈاپور مریم نواز سے متعلق اپنے بیان پر قائم، پی ٹی آئی کو اکثریت ملے گی : حکومت

مریم نواز سے متعلق

اسلام آباد : حکومت کا کہنا ہے کہ آزاد کشمیر میں دونوں جماعتوں کی الیکشن مہم صرف عمران خان پر تنقید تک محدود ہے، پی ٹی آئی کو بھاری اکثریت ملے گی۔ علی امین گنڈاپور نے کہا کہ مریم نواز سے متعلق اپنے بیان پر قائم ہوں۔

وفاقی وزیر مراد سعید اور علی امین گنڈا پور نے آزاد کشمیر الیکشن کے حوالے سے اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔

پریس کانفرنس کے دوران اسکرین پر اقوام متحدہ میں عمران خان کی تقریر کا کلپ دکھایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر نے الیکشن سے قبل ہی کشمیری عوام نے تحریک انصاف کے حق میں فیصلہ سنادیا۔دو بچے ابو بچاؤ مہم چلارہے ہیں، ان کا آزاد کشمیر سے کوئی تعلق نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی دونوں جماعتوں کی الیکشن مہم صرف عمران خان پر تنقید تک محدود ہے۔ تین تین باریاں انہوں نے لیں اور ذکر عمران خان کا! انہوں نے کشمیر کے لئے کچھ کیا ہوتا تو ذکر بھی کرتے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ پی ٹی آئی کے وزراء پر فائرنگ کی گئی اور پتھراؤ کیا اور پھر مظلوم بن گئے۔ انہوں نے اپنے دور میں مودی سے ملاقاتیں کیں۔ مودی اور جندال کو بلایا گیا، حریت رہنماؤں سے ملاقات سے انکار کیا گیا۔ پریس کانفرنس کے دوران بھارتی وزیراعظم مودی کی نواز شریف کے گھر جاتی امرا آمد کے کلپ بھی دکھائے گئے۔

مراد سعید کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم نے کشمیر کا مقدمہ دنیا کے ہر فورم پر بہترین اندازمیں پیش کیا۔ جب سے عمران خان کشمیر کے سفیر بنے،

انہوں نے مودی کو بے نقاب کیا۔ کل سے جو سروے رپورٹس آ رہی ہیں اس کے مطابق پی ٹی آئی کو بھاری اکثریت ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر میں سیاحت کو فروغ دیا جائے گا۔ آزاد کشمیر میں سروے جاری ہے۔ احساس پروگرام سے کشمیری بھی مستفید ہوں گے۔ غربت کے خاتمے کے لیے کام کریں گے۔ آزاد کشمیر میں تمام الیکشن مشینری (ن) لیگ حکومت کی تعینات کردہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں : آزاد کشمیر کے انتخابات کو متنازع ترین انتخابات ہونے سے بچایا جائے : بلاول بھٹو

وفاقی وزیر امور برائے کشمیر علی امین گنڈاپور نے کہا کہ کشمیری عوام نے وزیر اعظم عمران خان کو اپنا سفیر قرار دیا۔  مجھے پہلے ہی اندازہ ہوگیا تھا کہ یہ الیکشن کو سبوتاز کرنے کی کوشش کریں گے۔ یہ لوگ بھارت کی طرز پر حرکات کریں گے۔ ان لوگوں نے اشتعال انگیزی کرنے کی کوشش کی۔

علی امین گنڈاپور نے کہا کہ ہم الیکشن بھاری اکثریت سے جیت رہے ہیں۔ بحیثیت وزیر مجھ پر پابندی لگانا زیادتی ہے، ہم نے واویلا نہیں کیا۔ ایل او سی پر چھ ارب سے چھ سو بنکر بنانے کا کام شروع ہوچکا ہے۔ آزاد کشمیر کے آبادی کو انصاف صحت کارڈ دیا۔ پانچ سو ارب کا ترقیاتی پیکج دینے کا اعلان کرتے ہیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ہماری ترجیح پر امن انتخابات کا انعقاد ہے۔ آزاد کشمیر کے الیکشن کمشن پر اعتماد ہے۔ ہم نے نواز شریف اور زرداری کو چور کہا ہے۔

پاکستان کی عدلیہ نے نواز شریف اور آصف زرداری کو چور قرار دیا۔ مریم نواز ہر جگہ فوج پر بات کر رہی ہے۔ مریم نواز نے جلسے میں چیف سیکریٹری، آئی جی کو دھمکی دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مریم نے کشمیر کا سودا کرنے کا الزام لگایا ہے۔ ان کی ان تقاریر کا نوٹس نہیں لیا جا رہا۔ میرے لیڈر پر بات کی گئی تو میرا رد عمل آئے گا۔ مریم اور بلاول نے بات کی ان پر کوئی نوٹس نہیں لیا گیا۔ ہم اداروں کا احترام کرتے ہیں۔  مریم نواز سے متعلق اپنے بیان پر قائم ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ بتا رہا ہوں کہ میرے پاس مریم سے متعلق بہت سی باتیں ہیں۔ آٹھ کروڑ روپے مریم نواز کی سرجری پر لگے۔ ایسی باتیں کی گئیں تو سرجری اتر بھی سکتی ہے۔

علی امین گنڈاپور نے کہا کہ میرے پاس بہت سے ریکارڈ موجود ہے وہ سامنے لے آؤں گا۔ میرے لیڈر کے بارے میں جو مریم نواز کہے گی، جواب میں بالکل وہی بات کروں گا۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ آزاد کشمیر کے انتخابات کے جو نتائج بھی ہونگے وہ ہمیں قبول ہونگے۔ پہلا ریفرنڈم ہوگا کہ کشمیری پاکستان کیساتھ رہنا چاہتا ہیں یا بھارت کیساتھ رہنا چاہتے ہیں۔

متعلقہ خبریں