نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکلانے پر نیب نے وزرات داخلہ کے خط کا جواب دے دیا

‏اسلام آباد : سابق وزیر اعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے پر نیب نے وزرات داخلہ کے خط کا جواب دے دیا ہے۔

ذرائع نیب کے مطابق چیئرمین نیب اور متعلقہ افسران چھٹی کے روز بھی نیب دفتر میں موجود ہیں۔ وزارت داخلہ کی درخواست کا قانونی جائزہ لیا گیا۔

نیب نے وزارت قانون سے قانونی رائے لینے پر اتفاق کیا ہے۔ ذرائع نیب کا کہنا ہے کہ حکومت معاملے میں ہمیں بھی گھسیٹنا چاہتی ہے۔ نواز شریف بیمار ہیں تو انہیں ضرور بیرون ملک علاج کے لیئے بھیجا جانا چاہیے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت پارٹی ترجمانوں کا اجلاس ہوا، اس موقع پر ملک کی سیاسی اور معاشی صورتحال کے علاوہ دیگر امور پر گفتگو کی گئی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ نوازشریف کے ای سی ایل کا معاملہ نیب کے پاس ہے، نیب کی سفارش پر نوازشریف کا نام ای سی ایل میں ڈالا گیا تھا۔

نیب کی سفارش پر ہی ان کا نام ای سی ایل سے نکالا جائے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے پارٹی رہنماؤں کو نوازشریف کی صحت کے حوالے سے بیان بازی نہ کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ پہلے دن سے ہمارا مؤقف ہے کہ سیاست کو صحت سے الگ رکھا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم اداروں کی آزادی اور ان کی خود مختاری پریقین رکھتے ہیں۔