جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

نواز شریف کے لیئے تمام کوششوں کے باوجود حالت بدستور تشویشناک ہے : ذاتی معالج

لاہور : نواز شریف کے ذاتی معالج کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی صحت بحالی کی تمام کوششوں کے باوجود حالت بدستور تشویشناک ہے۔ نوازشریف کی حالت کو دیکھتے ہوئے ہنگامی نوعیت کے اقدامات درکار ہیں۔ پلیٹ لیٹس کی تعداد مناسب سطح پر نہ ہونے سے ہارٹ اٹیک، اسٹروک اور بلیڈنگ کا خطرہ موجود ہے۔

‏نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا ہے کہ نوازشریف کو زندگی بچانے والی دوائیں اسٹیرائیڈز اور الٹرامبوپیک جاری رکھے ہوئے ہیں۔ نواز شریف کو یہ دوائیں پلیٹ لیٹس کو محفوظ بنانے کے لیے دی جارہی ہیں۔ یہ دوائیں ہارٹ اٹیک اور خون کے بہنے سے بچاؤ کے لیے ہیں۔

ڈاکٹر عدنان نے کہا کہ ان ‏تمام کوششوں کے باوجود نوازشریف کی حالت بدستور تشویشناک ہے، علاج کے نتیجے میں مزید طبی مشکلات پیدا ہورہی ہیں۔ جان بچانے کے لیے انتہائی نگہداشت کی جارہی ہے۔ نوازشریف کی حالت کو دیکھتے ہوئے ہنگامی نوعیت کے اقدامات درکار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پلیٹ لیٹس کی تعداد اس سطح پر نہیں آرہی جہاں ان کی جان کو خطرہ نہ رہے۔ پلیٹ لیٹس کی تعداد مناسب سطح پر نہ ہونے سے ہارٹ اٹیک، اسٹروک اور بلیڈنگ کا خطرہ موجود ہے۔ اسٹیرائیڈز لگانے کے باوجود پلیٹ لیٹس کی تعداد پوری نہیں ہورہی۔

اس سے قبل بارہ رکنی میڈیکل بورڈ نے نوازشریف کا طبی معائنہ کیا۔ پلیٹ لیٹس چیک کرنے کے لیے خون کے نمونے لیے گئے، جس کے بعد بورڈ ممبران کا اجلاس ہوا۔

اجلاس کے بعد بورڈ کے سربراہ پروفیسر محمود ایاز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شوگر نارمل رکھنے کے لیے ادویات دی جا رہی ہیں۔ دل گردوں سمیت دیگر امراض کے لیے مزید ٹیسٹ شوگر لیول بڑھنے کی وجہ سے ملتوی کردیئے گئے۔

انہوں نے کہا کہ پلیٹ لیٹس کے لیے مزید کوئی کورس نہیں دیا جا رہا۔ پلیٹ لیٹس کی تعداد 51 ہزار ہی ہے۔ پلیٹ لیٹس اب بتدریج بڑھتے رہیں گے، کورس مکمل ہے۔ بلڈ پریشر تھوڑا زیادہ ہے، لیکن کنٹرول میں ہے، گردوں کے نظام کو بہتر کرنے کے لیے بھی ادویات میں ردوبدل کیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں