جی ٹی وی نیٹ ورک
صحت

نیند کرنے کے اوقات کا صحت سے گہرا تعلق ہے : طبی ماہرین

کراچی(ویب ڈیسک): طبی ماہرین نے ایک تحقیق کے ذریعے بتایا ہے کہ ہر انسان کے سونے کا الگ پیٹرن ہوتا ہے جو جسم کے اندر موجود حیاتیاتی گھڑی پر اثر ہوتے ہیں۔ اور اس گھڑی کو ڈسٹرب کرنا مطلب بے شمار مسائل اور جانلیوا امراض کو دعوت دینا ہے، اسی لیے نیند کے حساب سے کئی کیٹیگریز بنائی گئی ہیں۔

مارننگ لرک: اس کیٹگری کے افراد صبح 9 سے 11 بجے تک نہایت چست ہوتے ہیں، اس کے علاوہ بقیہ پورا دن یہ سست رہتے ہیں۔

آفٹر نونر: ایسے افراد صبح اور شام دونوں وقت سست اور غنودگی میں رہتے ہیں تاہم صبح 11 سے شام 5 تک نہایت ایکٹو ہوتے ہیں۔

نیپر: ایسے افراد صبح بہت چاق و چوبند ہوتے ہیں تاہم صبح 11 بجے سے سہ پہر 3 بجے تک یہ غنودگی میں رہتے ہیں، اس کے بعد شام میں یہ ایک بار پھر چست اور چاق و چوبند ہوجاتے ہیں۔

نائٹ اولز: ایسے افراد دن کے آغاز میں خود کو نہایت تھکا ہوا اور غنودگی میں محسوس کرتے ہیں، ان کی صبح 10 بجے سے پہلے نہیں ہوتی۔ تاہم اٹھنے کے بعد یہ سارا دن الرٹ رہتے ہیں اور رات کو بہت دیر تک جاگتے ہیں۔

سوئفٹس: ایسے افراد جس وقت اٹھتے ہیں اس وقت سے لے کر رات سونے تک الرٹ اور چاق و چوبند رہتے ہیں اور اس دوران کوئی غنودگی یا تھکن محسوس نہیں کرتے۔

ووڈ کوکس: ایسے افراد سارا دن غنودگی اور تھکن محسوس کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں