پارٹی عہدہ کیس : مریم نواز کے وکیل کی عدم پیشی کے باعث سماعت 11 ستمبر تک ملتوی

پارٹی

اسلام آباد : الیکشن کمیشن آف پاکستان نے مریم نواز کو پارٹی عہدے سے ہٹانے کے کیس کی سماعت میں وکیل صفائی کی عدم پیشی کے باعث 11 ستمبر تک ملتوی کردی۔

تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر سردار رضا حیات کی سربراہی میں 3 رکنی کمیشن نے مریم نواز کو عہدے سے ہٹانے کیلئے درخواست پر سماعت کی۔

مریم نواز کے وکیل بیرسٹر ظفراللہ مصروفیت کے باعث پیش نہ ہو سکے، چیف الیکشن کمشنر سردار رضا حیات نے کہا کہ ہمارا ارادہ تھا، آج اس کیس کو نمٹا دیں۔

مزید پڑھیں : شہباز شریف، حمزہ شہباز، مریم نواز اور رانا ثناء کے کیسز کی سماعت کرنیوالے ججز تبدیل

الیکشن کمیشن نے ہدایت کی آئندہ سماعت پر پارٹی عہدے سے نااہلیت سے متعلق تفصیلی دلائل دیں، الیکشن کمیشن نے مریم نواز کے وکیل کی عدم پیشی کے باعث سماعت 11 ستمبر تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف کی جانب سے جمع کرائی گئی درخواست میں مریم نواز کی بطور نائب صدر تقرری کے نون لیگی فیصلے کو آئین و قانون سے متصادم قرار دیا گیا تھا۔

درخواست میں ان تمام قانونی بنیادوں کا احاطہ کیا گیا تھا، جن کی رو سے مریم نواز کسی بھی سیاسی و عوامی عہدے کیلئے نااہل ہیں، عدالت عظمیٰ کے فیصلوں کا بھی مفصل ذکر موجود تھا۔

پارلیمانی سیکرٹری برائے ریلوے فرخ حبیب نے الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ کیا مسلم لیگ نے اندر قیادت کا فقدان ہے، نااہل شخص کو پارٹی عہدہ دے کر مسلم لیگ ن کیا پیغام دینا چاہ رہی ہے، ن لیگ والے چاہتے ہیں پاکستان میں رائے ونڈ کا قانون نافذ کیا جائے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ مریم نوز مشہور پانامہ رانی ہیں اور ٹویٹر پر ہمیں لیکچر دیتی ہیں، مریم نواز اور بلاول بھٹو ٹیسٹ ٹیوب لیڈرشپ نافذ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، آج تک ایسا منظر نہیں دیکھا کہ مریم نواز نے اپنے والد کو لاہور کی گلیاں پھرا کر کوٹ لکھپت جیل پہنچایا، مسلم لیگ ن کا کوئی سیاسی مستقبل نظر نہیں آرہا ہے۔

بیرسٹر ملیکہ بخاری کا کہنا تھا کہ عدالت سے سزا یافتہ مریم نواز کو پارٹی کا نائب صدر مقرر کیا گیا ہے، جو شخص 62،63 پر پورا نہیں اترتا، وہ پارٹی عہدہ نہیں رکھ سکتا ہے، مریم نواز کی بطور نائب صدر تقرری کو چیلنج کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مریم نواز شریف نے ہمیشہ اپنے عہدے کو پاکستان کے اداروں کے خلاف استعمال کیا ہے، مریم نواز پاکستان کے اداروں کو متنازع بناتی رہی ہیں۔

مریم نواز کے خلاف پی ٹی آئی کے اراکین قومی اسمبلی فرخ حبیب، ملیکہ بخاری،کنول شوذب اور جویریہ ظفر نے درخواست دائر کی ہے۔