پنجاب بھر میں ایم ٹی آئی ایکٹ کے خلاف احتجاج تیسرے روز بھی جاری

لاہور : پنجاب بھر میں پی ٹی آئی حکومت کے جاری کردہ ایم ٹی آئی ایکٹ کے خلاف احتجاج تیسرے روز بھی جاری ہے۔ تمام سرکاری اسپتال میں کام بند ہے۔ چوہدری پرویز الاہی کی مظاہرین کو منانے کی کوشش بھی ناکام ہوگئی ہے۔

پنجاب بھر میں میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹوٹ ایکٹ کے خلاف ہڑتال تیسرے روز بھی جاری ہے۔ ہڑتال کے باعث مریض شدید پریشانی کا شکار ہیں۔ اوپی ڈیز، ان ڈور، آپریشن تھیٹر کے بعد الائنس نے ایمرجنسی میں بھی کام بند کرنے کی دھمکی دے دی ہے۔

احتجاج کرنے والوں میں ینگ ڈاکٹرز، ینگ کنسلٹنٹس، پیرا میڈیکل اسٹاف، نرسز اور دیگر عملہ شامل ہے۔

سروسز اسپتال، جناح، میو، پی آئی سی، چلڈرن، جنرل اسپتال، گنگارام، نشتر اسپتال ملتان سمیت دیگر اسپتالوں میں ملازمین کام چھوڑ کر احتجاج میں شامل ہیں۔ گرینڈ ہیلتھ الائنس نے شعبہ آؤٹ ڈور میں مظاہرہ اور نعرے بازی کی۔

گرینڈ ہیلتھ الائنس کی اسپکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی سے ملاقات کی۔ ملاقات میں چئیرمین گرینڈ ہیلتھ الائنس سلمان حسیب چوہدری سمیت دیگر نے شرکت کی۔

چئیر مین گرینڈ ہیلتھ الائنس سلمان چوہدری کا کہنا تھا کہ ہمیں مریضوں کی مشکلات کا درد ہے، مگر ان کا آنے والا وقت تاریخ ہوگا. سرکاری اسپتالوں میں ٹھیکیداری نظام سے ملازمین رل جائیں گے۔

پرویز الاہی نے کہا کہ آپ کے مسائل سے باخوبی واقف ہو۔ مسائل کا حل ٹیبل پر ہوتا ہے، کام چھوڑنے سے نہیں۔

ملاقات میں معاملات طے ہونے کے بعد گرینڈ ہیلتھ الائنس نے فیصلہ کیا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک احتجاج جاری رہے گا۔