جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

نقیب اللہ محسود کی موت کو ایک سال بیت گیا، اہل خانہ انصاف کے منتظر

 نقیب اللہ محسود کی موت کو ایک سال بیت گیا۔ کیس کو اب تک حتمی انجام تک نہیں پہنچایا جاسکا ہے۔ ایک سال بعد بھی اہل خانہ انصاف کے منتظر ہیں۔
کراچی کے علاقے شاہ لطیف ٹاؤن میں گزشتہ برس 13 جنوری کو افسوسناک واقعہ پیش آیا۔ ملیر کے سابق ایس ایس پی اور انکاؤنٹر اسپیشلسٹ ملیر راؤ انوار نے نوجوان نقیب اللہ محسود سمیت 4 افراد کو حراست میں لیا اور دہشت گرد قرار دے کر مار دیا۔ نقیب اللہ محسود کی موت کے بعد اس کی ماڈلز کے انداز میں تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں تو سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث چھڑ گئی۔ کراچی، اسلام آباد اور دیگر شہروں میں نقیب اللہ محسود کے حق اور پولیس کے خلاف احتجاج کیا گیا۔
سپریم کورٹ نے واقعے کا نوٹس لیا تو پھر راؤ انوار اورمقابلے میں شریک دوسرے اہلکاروں کے خلاف مقدمات درج کیے گئے۔ واقعہ کی تحققیات کیلئے بنائی گئی جے آئی ٹی کی سفارش پر راؤ انوار کو معطل کرکے ان کانام ای سی ایل میں شامل کردیا گیا۔ مقابلے میں شریک ٹیم کی گرفتاری کے لیے بہت کوششیں کی گئیں اور کچھ اہلکار گرفتار ہوگئے لیکن راؤانوار ہاتھ نہ آسکے بعد انہوں نے ڈرامائی انداز میں سپریم کورٹ پہنچ کر گرفتاری دے دی۔ چیف جسٹس کی جانب سے لیے گئے ازخود نوٹس کی سماعت اب بھی جاری ہے۔ ایک برس بعد بھی کیس کو اب تک حتمی انجام تک نہیں پہنچایا جاسکا۔

متعلقہ خبریں