جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ ایکٹ 2019 پر اجلاس کا انعقادکیا گیا

زیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کی زیرصدارت کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ ایکٹ 2019 پر اجلاس کا انعقاد کیا گیا

اجلاس میں سابق وزیر صحت پروفیسر جواد ساجد، سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ ثاقب ظفر، سپیشل سیکرٹری شکیل احمد نے بھی شرکت کی سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ ثاقب ظفر کی مجوزہ بل پر بریفنگ اجلاس میں پی کے ایل آئی کے افعال کار میں بہتری کے لئے قانون سازی پر تبادلہ خیال کیا گیا

اس موقع پر ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ ” پی کے ایل آئی” کو گردہ اور جگر کے علاج کا مفید اور موثر ادارہ بنانا چاہتے ہیں، پی کے ایل آئی ایکٹ بنانے کا مقصد جسمانی اعضا کی پیوندکاری میں قانونی رکاوٹیں دور کرنا ہے پی کے ایل آئی بل کو تمام سٹیک ہولڈرز کے تعاون سے حتمی شکل دی جائے گی.

بیرون ملک مقیم پاکستانی ماہرین ٹرانسپلاٹیشن کو اپنے وطن میں کام کرنے کے لئے بلائیں گے کئی ماہرین ٹرانسپلاٹیشن پاکستان آکر خدمات انجام دینا چاہتے ہیں، پروفیسر جواد ساجد اور پروفیسر ایاز محمود نے پی کے ایل آئی بل کے تکنیکی پہلوئوں پر روشنی ڈالی.

متعلقہ خبریں