جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پی ڈی ایم کے جلسے کی انتظامیہ کے خلاف مقدمہ درج، خرم دستگیر بھی نامزد

پی مقدمہ

گوجرانوالہ : پی ڈی ایم کے جلسے کی انتظامیہ کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

گوجرانوالہ کے جناح اسٹیڈیم میں پی ڈی ایم کے ہونے والے جلسے سے متعلق انتظامیہ کے خلاف معاہدے کی خلاف ورزی پر مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ سرکار کی مدعیت میں تھانہ سول لائن میں درج مقدمے میں کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی اور سڑکیں بند کرنے کی دفعات شامل کی گئیں۔

مقدمے میں ن لیگی رہنماء خرم دستگیر، ایم این اے محمود بشیر ورک اور سٹی صدر سلمان خالد کو نامزد کیا گیا۔ جلسہ انتظامیہ نے ایس او پیز پر عملدرآمد کا تحریری معاہدہ کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : پی ڈی ایم کی ناکامی عمران خان سے زیادہ ملک کی ضرورت ہے : فواد چوہدری

تھانہ سول لائن میں درج ایف آئی آر کے مطابق معاہدے کے خلاف گکھڑ، کامونکی سمیت دیگر علاقوں میں کیمپ لگائے گئے، شرکا جنگلے توڑ کر اور کنٹینرز ہٹا کر ممنوعہ علاقے میں گاڑیاں لے گئے۔ جلسے سے سزا یافتہ افراد نے بھی خطاب کیا، حکومت اور حکومتی اداروں کے خلاف تقاریر ہوئیں، نعرے لگائے گئے، جلسہ گاہ میں بڑے اسپیکر لگا کر ایمپلی فائر ایکٹ کی خلاف ورزی کی گئی۔

دوسری طرف پی ڈی ایم کے جلسے میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے پاک فوج کے خلاف بات کرنے پر گلگت میں اندراج مقدمہ کی درخواست دے دی۔ جلسے میں کورونا ایس او پی کی خلاف ورزی پر گوجرانوالا میں مقدمہ درج کرلیا گیا۔

پی ڈی ایم کے جلسے میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے پاک فوج کے خلاف بات کرنے پر گلگت بلتستان میں پاکستان تحریک انصاف کے حلقہ چارنگر سے اُمیدوار آغا بہشتی نے سکندرآباد تھانے میں نواز شریف کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کی درخواست پیش کردی۔

متعلقہ خبریں