عالمی عدم تعاون، نیب بے بس، بیرون ملک بھیجے گئے 50 خطوط میں سے صرف 5 کا جواب

عالمی

اسلام آباد : نیب کی انسداد بدعنوانی کارروائیوں میں عالمی عدم تعاون بڑھی رکاوٹ بن گیا۔ ایک سال میں باہمی قانونی معاونت کے لئے بیرون ملک بھیجے گئے 50 خطوط میں سے 5 کا جواب آیا۔

نیب کی رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ نیب کی انسداد بدعنوانی کارروائیوں میں عالمی عدم تعاون بڑھی رکاوٹ بن رہا ہے۔

نیب کی جانب سے ایک سال میں باہمی قانونی معاونت کے لئے بیرون ملک 50 خطوط لکھے گئے، جن میں 5 کا جواب آیا اور باقی 45 خطوط کا جواب کسی ملک نے نہیں دیا، جن میں نواز شریف کی بیرون ملک جائیدادوں و کمپنیوں سے متعلق خط بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : نیب کی کارکردگی، پاکستان بدعنوانی کے تاثر کے حوالے سے 175 سے 116 ویں نمبر پر آگیا

اس کے علاوہ بیرون ملک مطلوب 7 ملزمان کی حوالگی کی درخواست بھی کی گئی ہے، اس کا جواب بھی تاحال نہیں دیا گیا ۔

واضح رہے کہ قومی احتساب بیورو کو احتساب کے معاملے پر حزب اختلاف کے رہنماؤں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

حزب اختلاف کا الزام ہے کہ قومی احتساب بیورو احتساب کے نام پر حزب اختلاف کے خلاف کارروائی کررہا ہے۔

دو روز قبل شاہد خاقان عباسی نے کہا تھا کہ چیئرمین نیب کی تقرری کے لیے قوم سے معافی مانگتا ہوں۔ پیپلز پارٹی کی طرف سے نام آیا تھا، اتفاق رائے سے تقرری کا فیصلہ کیا۔ یہ کیسا ادارہ ہے کہ پہلے سابق وزیراعظم کو گرفتار کرتے ہیں اور اس کے بعد ان کے خلاف کیس بناتے ہیں۔ میں نے اگر کوئی کرپشن کی ہے، تو بتائیں کیا کرپشن کی گئی ہے۔

دوسری طرف قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ریٹائرڈ) جاوید اقبال کا کہنا ہے کہ کرپشن کو جڑ سے اکھاڑنا ہمارا نصب العین ہے۔ بدعنوان عناصر سے آہنی ہاتھوں کے ساتھ نمٹا جائے گا۔ نیب احتساب سب کے لیے کی پالیسی پرعمل پیرا ہے۔ نیب کو اپنے قیام سے اب تک ایک لاکھ 56 ہزار 858 شکایات موصول ہوئیں۔ اس عرصے میں نیب نے 1249 کرپشن ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کیے۔ نیب نے 326 ارب کی ریکوری کی۔