جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

آغا سراج درانی کی ضمانت مسترد، گرفتاری کا ڈر، سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ

کورٹ سے رجوع

کراچی : نیب حکام آغا سراج درانی کو گرفتار کرنے کے لیئے متحرک ہوگئے، سراج درانی نے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

سندھ ہائیکورٹ میں اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت کی سماعت ہوئی۔

عدالت نے آغا سراج درانی کی درخواست مسترد کردی، جبکہ گلزار احمد سمیت آغا سراج کی فیملی میمبرز کی درخواست منظور کرلی گئی۔ جسٹس ندیم اختر اور جسٹس اقبال کلہوڑو نے گزشتہ ہفتے فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

اسپیکر سندھ اسمبلی کے خلاف ایک ارب سے زائد غیر قانونی آمدن سے اثاثے بنانے کا الزام ہے، کیس میں آغا سراج درانی سمیت ان کی اہلیہ، بیٹا اور تین بیٹیاں بھی شامل ہیں۔

ملزمان کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنس زیر سماعت ہے۔ سندھ ہائیکورٹ ایک آغا سراج درانی اور دیگر کی ضمانت منظور کر چکی تھی۔ نیب نے ہائیکورٹ کے فیصلے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : سپریم کورٹ نے سعد رضوی کے رہائی کے فیصلے پر عمل درآمد روک دیا

سپریم کورٹ نے ضمانتوں پر دوبارہ دلائل سننے کے لئے معاملہ واپس ہائیکورٹ بجھوایا تھا۔ چیف جسٹس ہائیکورٹ نے ضمانت پر فیصلے کے لئے دو ججز پر خصوصی بینچ تشکیل دیا تھا۔

سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے ضمانت مسترد ہونے کے بعد نیب حکام الرٹ ہوگئے۔ نیب کے اعلیٰ حکام آغا سراج درانی کو گرفتار کرنے کے لیے وارنٹ گرفتاری کے ساتھ ہائیکورٹ میں موجود تھے۔

آغا سراج درانی سماعت کے دوران عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔ انہوں نے گرفتاری کے ڈر سے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ آغا سراج درانی آج کسی بھی وقت سپریم کورٹ میں پیش ہوں گے۔

نیب نے آغا سراج درانی کو گرفتار کرنے کا لائحہ عمل تیار کرلیا۔ نیب نے گرفتاری کے لئے ٹیمیں تشکیل دے دی۔ حکام کا کہنا ہے کہ وارنٹ موجود ہے، آج ہی آغا سراج درانی کو گرفتار کریں گے۔

متعلقہ خبریں