جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنس کیس؛ عدالت کا نواز شریف کو گرفتار کرنے کا حکم

نواز

اسلام آباد: ہائیکورٹ میں العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے درخواست مسترد کرتے ہوئے نواز شریف کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے نواز شریف کی درخواستوں پر محفوظ فیصلہ سنادیا، عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی درخواستیں مسترد کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دے دیا اور نواز شریف کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔

العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سزا کیخلاف نوازشریف کی اپیل پرسماعت جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پرمشتمل ڈویژن بینچ نے کی۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ ابھی تو ہمیں یہ طے کرنا ہے کہ نواز شریف کی درخواست سنی بھی جا سکتی ہے یا نہیں؟ نیب نے کہا کہ ضمانت منسوخی کی درخواست احتیاطی اقدامات کے طور پر دائر نہیں کی۔

یہ بھی پڑھیں: نواز شریف کی نئی میڈیکل رپورٹس، ڈاکٹر کا انہیں لندن میں ہی قیام کا مشورہ

نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے مؤقف اپنایا کہ ان کے مؤکل کو بغیر سنے دوسری عدالت نے اشتہاری قرار دیدیا۔ اس وقت نوازشریف بیرون ملک علاج کیلئے گئے ہوئے ہیں۔ جب وہ پاکستان میں تھے تو عدالتوں میں پیش ہوتے رہے۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ صرف اتنا بتائیں عدالت اشتہاری کو سن سکتی ہے یا نہیں؟

عدالت نے کہا کہ آپ سرنڈر کرنے کے حکم پر نظرثانی کی درخواست چاہتے ہیں؟ آپ چاہتے ہیں نوازشریف کی عدم موجودگی میں میرٹ پر سماعت جاری رہے؟ خواجہ حارث نے کہا کہ ان دونوں میں سے کوئی بھی ایک بات کردیں۔

نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ اصول یہ ہے کہ ملزم کا سرنڈرکرنا ضروری ہوتا ہے۔

متعلقہ خبریں