جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی موسیٰ گیلانی کو پولیس نے گرفتار کرلیا

علی موسیٰ گیلانی

ملتان: سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی موسیٰ گیلانی کو گرفتار کر لیا گیا۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے احتجاج کرنے کے لیے تھانہ چہلیک پہنچے تھے، جہاں پولیس نے انہیں گرفتار کرلیا۔

موسیٰ گیلانی کی گرفتاری کیخلاف تھانے کے باہر پیپلز پارٹی کے کارکنان کا احتجاج جاری ہے، سید موسیٰ گیلانی کی رہائی کا مطالبہ کردیا۔

ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی کے کارکنان کی بڑی تعداد تھانے کے باہر موجود ہے، کارکنان موسیٰ گیلانی کی رہائی کے لیے نعرے بازی کررہے ہیں، سابق رکن قومی اسمبلی سید علی موسیٰ گیلانی گرفتار کارکنان سے اظہار یکجہتی کے لیے ریلی کے ساتھ تھانے پہنچے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والے کارکنان کو پولیس نے گرفتار کیا تھا، جن کی رہائی کا مطالبہ کرنے کے لیے پیپلز پارٹی کے کارکنان کے ہمراہ علی موسیٰ گیلانی تھانے پہنچے، جہاں پولیس نے ان کو تھانے میں بٹھا لیا، جس کے بعد پیپلزپارٹی کے کارکنان نے نعرے بازی شروع کردی کہ موسیٰ گیلانی کو رہا کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: توشہ خانہ ریفرنس : آصف علی زرداری اور یوسف رضا گیلانی پر فرد جرم عائد

دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ سید علی موسیٰ گیلانی کو گرفتار نہیں کیا گیا بلکہ وہ خود کارکنان سے ملنے کے لیے تھانے کے اندر آئے ہیں۔

واضح رہے کہ حکومت کی جانب سے کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے والوں کیخلاف سختی سے نمٹا جا رہا ہے۔

دوسری جانب پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے علی موسٰی گیلانی کی رہائی کا مطالبہ کردیا۔

انہوں نے کہا کہ پرُامن سیاسی سرگرمیاں، احتجاج عوام کا حق ہے اور یہ روکنا آئینی خلاف ورزی ہے، علی موسیٰ گیلانی کو فوراً رہا کیا جائے۔

بلاول بھٹو نے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ پی ڈی ایم ملتان جلسے کے حوالے سے سرگرم علی موسٰی گیلانی کی گرفتاری اس بات کا اظہار ہے کہ حکومت بوکھلا چکی ہے حکومت جان چکی ہے کہ عوام سلیکٹڈ حکومت کے بجائے جمہوریت کے ساتھ ہیں حکومت کے اوچھے ہتھکنڈے ہماری راہ میں رکاوٹ نہیں بن سکتے احتجاج ہمارا جمہوری حق ہے اور 30 نومبر کو جو بھی ہو، ہم یہ حق حاصل کرکے رہیں گے۔

متعلقہ خبریں