جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

مولانا عادل کی نماز جنازہ ادا کردی گئی، واردات کی تفتیش شروع

کراچی: دہشت گردوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے مولانا عادل اور انکے ڈرائیور کے قتل کی وارادات کی تفتیش شروع کردی گئی، مولانا عادل کی نماز جنازہ میں اہم مذہبی شخصیات سمیت شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی میں دہشت گردوں کی فائرنگ سے جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل خان اور ان کے ڈرائیور کی شہادت کے واقعے کی تفتیش کا باقاعدہ آغاز کردیا گیا ہے۔

ملزمان کس راستوں سے فرار ہوئے سی سی ٹی وی فوٹیجز حاصل کی جارہی ہیں جائے وقوعہ کی جیو فینسنگ کی گئی ہے، ملزمان کی تعداد تین تھی جبکہ اب تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ بیک اپ پر کتنے ملزمان تھے۔

یہ بھی پڑھیں: جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل قاتلانہ حملے میں ڈرائیور سمیت جاں بحق

مولانا عادل خان اور انکے ڈرائیور مقصود کی نماز جنازہ حب ریور روڈ پر واقع جامعہ فاروقیہ فیز 2 میں ادا کردی گئی، نماز جنازہ مولانا عادل خان کے بھائی عبیداللہ خالد نے پڑھائی۔

نماز جنازہ میں سنیٹر مولانا عبدالغفور حیدری، مولانا راشد محمود سومرو، شیخ الاسلام مفتی تقی عثمانی مولانا رفیع عثمانی، مولانا قاری محمد حنیف جالندھری ،جامعہ بنوریہ عالمیہ کے مہتمم مفتی نعمان نعیم سمیت دیگر علماء سمیت طلباء اور شہریوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

مولانا عادل کو جامعہ فاروقیہ فیز 2 میں ہی انکے والد مولانا سلیم اللہ خان کے پہلو میں سپرد خاک کیا گیا۔

متعلقہ خبریں