جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

آزاد کشمیر کے انتخابات کو متنازع ترین انتخابات ہونے سے بچایا جائے : بلاول بھٹو

متنازع ترین انتخابات

کراچی : بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن آزاد کشمیر کے انتخابات کو متنازع ترین انتخابات ہونے سے بچائے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چاہتے ہیں کہ ملک میں شفاف اور آزاد انتخابات ہوں، اگر پیپلز پارٹی کو آزاد اور شفاف طریقے سے موقع دیا جائے تو وہ آزاد کشمیر میں بار بار حکومت بنائے گی۔

انہوں نے بات جاری رکھتے ہوئے مزید کہا کہ باقی جماعتوں نے چور دروازے سے وہاں حکومت بنائی، لیکن پیپلز پارٹی نے ہمیشہ کارکنان کی محنت سے کشمیر میں حکومت قائم کی ہے۔ شفاف انتخابات ہوں گے تو عوامی لیڈر عوامی مفاد میں فیصلے لیں گے۔ پیپلز پارٹی کے علاوہ آزاد کشمیر میں کوئی سیاسی جماعت نہیں۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں جو تین نسلوں سے ظلم و ستم چلا آرہا ہے، ہم ان کے کاز کو اپنا کاز سمجھ کر دفاع کر رہے ہیں۔ کچھ دنوں سے آزاد کشمیر میں مہم چلا رہے تھے۔ باغ اور مظفر آباد میں تاریخی اور بڑے جلسے کیے۔

پی پی چیئرمین نے مطالبہ کیا کہ آزاد کشمیر کے انتخابات میں وفاقی حکومت نے ہر اختیار استعمال کرنے کی کوشش کی۔ الیکشن کمیشن اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے اس سے ان انتخابات کو بچائے کہ کہیں یہ تاریخ کے متنازع ترین انتخابات قرار نہ دیئے جائیں۔

یہ بھی پڑھیں : کشمیر پر ریفرنڈم کرانے کا وزیراعظم عمران خان کا بیان مسترد

علی امین گنڈا پور سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر آزاد کشمیر میں گھوم رہے ہیں، اس وزیر کو الیکشن کمیشن کی طرف سے آزاد وادی سے نکلنے کی ہدایت دی گئی تھی، اگر انتخابات سے قبل اس وزیر کے خلاف اور ان امیدواروں کے خلاف ایکشن نہیں لیا جاتا جنہوں نے ان کا استقبال کیا اور انہیں کل تک نااہل نہیں کیا جاتا تو یہ انتخابات بہت متنازع ہوں گے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ عالمی برادری کی نظریں آزاد کشمیر کی طرف ہیں، کیسا لگے گا کہ پہلے ایسے انسان کو نامزد کیا گیا، جسے کشمیر لکھنا نہیں آتا، نہ تاریخ معلوم ہے، پھر اسے وہاں ووٹ خریدنے اور آزاد کشمیر کے عوام کو ڈرانے کے لیے بھیجا، بھارت میں اسے کیسے دیکھا جائے گا کہ پاکستان کا وزیر آزاد کشمیر میں کھڑے ہو کر ہوائی فائرنگ کر رہا ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ تاریخ میں کشمیر کے معاملے کو اتنا نقصان نہیں پہنچایا گیا، جتنا عمران خان نے اپنے کردار، باتوں اور کوئی کام نہ کرکے پہنچایا ہے، آزاد کشمیر کی موجودہ حکومت ہو یا عمران خان کی وفاقی حکومت ہو، انہوں نے کشمیری عوام کو لاوارث چھوڑ دیا ہے۔

متعلقہ خبریں