جی ٹی وی نیٹ ورک
کھیل

بابراعظم ٹاپ کا پلئیر ہے اس کے سیکھنے کا عمل بہت زیادہ ہے: یونس خان

یونس خان

سینچورین: یونس خان کا کہنا ہے کہ فخر زمان اور بابر زمان توقعات کے مطابق حیران کن انداز میں کھیلے، بیٹسمینوں کو یہ سکھانے کی کوشش کررہا ہوں کہ صورتحال کے مطابق کھیلیں۔

بیٹنگ کوچ پاکستان کرکٹ ٹیم یونس خان کا ورچوئل پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ نوجوان ٹیم کے ساتھ ساؤتھ افریقہ میں سیریز جیتی سب کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔

بیرون ملک سیریزجیتنا ایک اچھی چیز ہے، مشکل حالات میں کرکٹ کھیلی اور سیریز جیتیں۔ پاکستان ٹیم نے ابھی بہت کچھ سیکھنا ہے کئی چیزوں پر کام کرنا ہے، خوشی اس بات کی ہے کہ بیٹسمینوں نے لمبی اننگز کھیلیں۔

یونس خان کا کہنا تھا کہ فخر زمان اور بابر زمان توقعات کے مطابق حیران کن انداز میں کھیلے، بیٹسمینوں کو یہ سکھانے کی کوشش کررہا ہوں کہ صورتحال کے مطابق کھیلیں۔

مڈل آرڈر میں ہم نے مختلف کھلاڑیوں کو کھلانے کی کوشش کی مڈل آرڈر پر کام کرنا ہے، ابھی ہماری ائیرپورٹ پر بھی میٹنگ ہوگی ان کے ساتھ پیپرز شئیر کرتا ہوں جب بھی موقع ملتا انہیں بتاتا ہوں۔

بیٹنگ کوچ کا کہنا تھا کہ ہمیں اپنی غلطیوں سے سیکھنا ہے حیدرعلی سیکھ رہا ہے لوئر آرڈر کو بھی پرفارم کرنا ہے، محمد حفیظ آف کلر نظرآئے بعض اوقات جب ٹاپ آرڈر تسلسل کے ساتھ کھیلتا ہے تو نیچے بیٹسمینوں کو مشکل ہوجاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: چوتھے ٹی ٹونٹی میں جیت ،ون ڈے کے بعد ٹی ٹونٹی سیریز بھی پاکستان کے نام

ان کا کہنا تھا کہ بابراعظم ٹاپ کا پلئیر ہے اس کے سیکھنے کا عمل بہت زیادہ ہے، بابراعظم نے جب کھیلنا شروع کیا تو اس نے محمد یوسف، مصباح الحق اور یونس خان کو کھیلتے ہوئے دیکھا، بابراعظم نے اپنے سامنے بڑے کھلاڑیوں کو کھیلتا ہوا دیکھ کر سیکھا۔

انہوں نے کہا کہ ہم کھلاڑیوں کو موقع دیتے ہیں کہ وہ خود کو ایکسپریس کریں اور اپنے انداز میں کھیلیں، ہم کھلاڑیوں کے انداز تبدیل نہیں کر سکتے ہم ان کے انداز کے مطابق کھیلنے دیتے ہیں۔ ایسا نہیں ہے ہم انہیں ان کے انداز کے مطابق نہیں کھیلنے دیتے، یہ بھی غلط ہے کہ کھلاڑی مصباح الحق، وقار یونس اور یونس خان کو نیٹس پر دیکھ کر دباؤ میں آجاتے ہیں۔

یونس خان کا کہنا تھا کہ یہ بہت کم ہے ہمیں انضمام الحق، محمد یوسف، محمد حفیظ جیسے پلئیرز مل سکیں میرے دور میں تو لوکل اور ڈومیسٹک میچ کے لیے بڑا مقابلہ ہوتا تھا۔ وقت کے ساتھ بہت تبدیلی آچکی ہیں ہمیں پلئیرز کو ٹائم دینا چاہیئے ان کے ساتھ انصاف کرنا چاہیئے۔

متعلقہ خبریں