جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سانحہ بلدیہ فیکٹری کو 8 سال مکمل، متاثرین تاحال انصاف کے منتظر

8 سال

کراچی : تاریخ کا دل دہلانے والا سانحہ بلدیہ فیکٹری کو 8 سال مکمل ہوگئے، آج تک نہ متاثرین کو انصاف مل سکا۔

11 ستمبر 2012 کراچی کی تاریخ کا سیاہ ترین دن، جب بلدیہ میں قائم گارمینٹ فیکٹری میں آگ لگ گئی اور دیکتھے دیکھتے 260 زندگیاں خاک کا ڈھیر بن گئیں۔ المناک سانحے کو آج 8 سال مکمل ہوگئے لیکن اس دوران نہ کیس کا فیصلہ ہو سکا اور نہ ہی متاثرین کو انصاف مل سکا۔

انسداد دہشت گردی عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر ملزمان کے خلاف کیس کا فیصلہ محفوظ کیا گیا ہے۔ رینجرز پراسیکیوٹر نے دعویٰ کیا ہے کہ سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس کا فیصلہ 17 ستمبر کو سنایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : سانحہ بلدیہ : فیکٹری کے مالک کا عدالت میں ویڈیو لنک کے ذریعے بیان ریکارڈ، مزید انکشافات

ملزمان کے خلاف پہلے کیس سٹی کورٹ میں چل رہا تھا، بعد میں انسداد دہشتگردی کی عدالت منتقل کیا گیا تھا۔ کیس میں اہم موڑ تب آیا جب فیکٹری مالکان نے آتشزدگی کا ذمہ دار ایم کیو ایم کو قرار دیا تھا۔

فروری 2017 میں ایم کیو ایم رہنماء روف صدیقی، رحمان بھولا، زبیر چریا اور دیگر پر فرد جرم عائد کی گئی تھی، جبکہ کیس میں ملزمان کے خلاف 400 عینی شاہدین اور دیگر نے اپنے بیان ریکارڈ کرائے۔ کیس کی پیروی رینجرز پراسیکیوشن نے کی۔

متعلقہ خبریں