جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

بلوچستان میں متحدہ اپوزیشن کا حکومت مخالف احتجاج

احتجاج

کوئٹہ : بلوچستان کی تمام اپوزیشن جماعتوں نے مشترکہ احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مستعفی ہونے اور الیکشن کمیشن سے تحریک انصاف کے فارن فنڈنگ کیس کا جلد از فیصلہ کرنے کا مطالبہ کیا۔

کوئٹہ میں اپوزیشن جماعتوں کا پلان سی کے تحت احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔

جمیعت علمائے اسلام (ف)، پشتونخوا میپ، عوامی نیشنل پارٹی، نیشنل پارٹی اور دیگر جماعتوں کے زیراہتمام جمعہ کو احتجاج کیا گیا۔ مظاہرین نے پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا اور حکومت مخالف نعرے لگائے۔

مقررین نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہ ملک کا کوئی طبقہ خوش نہیں، عوام کا جینا محال ہوچکا ہے۔

عوام کو ایک کروڑ نوکریاں دینے کی بجائے لوگوں سے روزگار چھینا جا رہا ہے۔ پچاس لاکھ مکانات دینے کی بجائے لوگوں کو بے گھر کیا جا رہا ہے۔

مقررین نے کہا کہ تبدیلی لانے اور نیا پاکستان بنانے کی بجائے ملک کو تباہی و بربادی سے دو چار کر دیا گیا ہے۔

کوئٹہ : پیٹرول سے بھرا ٹرک مسافر کوچ سے ٹکرا گیا، بارہ مسافر زندہ جل گئے

مہنگائی کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے گئے ہیں۔ لوگ خود کشیوں پرمجبور ہیں۔ پورا ملک حکومت کے خلاف  سڑکوں پر نکلا ہوا ہے۔

متحدہ اپوزیشن کے رہنماوں نے وفاقی حکومت کو جعلی قرار دیتے ہوئے ملک میں جلد نئے انتخابات کرانے اور الیکشن کمیشن سے پاکستان تحریک انصاف فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ جلد سنانے کا بھی مطالبہ کیا۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے مستعفی ہونے تک احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔

متعلقہ خبریں