جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

بلوچستان میں موسلادھار بارشیں، سینکڑوں دیہات زیر آب آگئے

بارش

کوئٹہ: شمال مشرقی بلوچستان میں موسلادھار بارشوں سے تباہ کاریاں جاری ہیں، کئی اضلاع کے ندی نالوں میں شدید طغیانی، سینکڑوں دیہات زیر آب آگئے ہیں۔

بلوچستان میں مون سون کی بارشوں نے تباہی مچادی ہے مستونگ، قلات، نوشکی، جھل مگسی، مچھ اور بولان میں نشیبی علاقے زیرآب آگئے ہیں۔ ندی نالوں میں شدید طغیانی اور سیلابی ریلے کے باعث درجنوں جانور بہہ گئے ہیں۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق ڈیرہ بگٹی میں دو، دالبندین میں ایک بچی، کوہلو، سوئی اور اوستہ محمد میں تین افراد سیلابی ریلے میں ڈوب کر جاں بحق ہوگئے۔

خضدار رتو ڈیرو ایم ایٹ شاہراہ بھلونک کے مقام پر پہاڑی تودہ گرنے سے سندھ بلوچستان کا زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ کوہلو سبی شاہراہ کو جزوی طور پر بحال کردیا گیا ہے۔

این ایچ اے کے مطابق مکران کوسٹل ہائی وے کو تمام قسم کی ٹریفک کے لئے کھول دیا گیا ہے۔

کراچی اور حب کے نواحی علاقوں کو پانی سپلائی کرنے والے حب ڈیم میں گزشتہ ایک رات کے دوران پانی کی آمد میں 7 فٹ کا ریکارڈ اضافہ ہوا ہے جب کہ گزشتہ 3 دن کے دوران ڈیم میں 16 فٹ پانی آچکا ہے۔

حب ڈیم میں سطح آب 328 فٹ کا نشان عبور کرچکا ہے جبکہ ڈیم 335 فٹ بلند پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش موجود ہے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق بلوچستان کے متاثرہ علاقوں میں پاک فوج کا ریلیف اور ریسکیو آپریشن جاری ہے۔ مختلف ٹیمیں پھنسے لوگوں کو نکالنے کے لیے سول انتظامیہ کی مدد کر رہی ہیں جبکہ سیلابی پانی میں پھنسے ہزاروں افراد میں کھانا تقسیم کیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں