جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

تازہ دودھ پر پابندی : لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب فوڈ اتهارٹی سے جواب طلب کرلیا

لاہور : ہائی کورٹ میں تازہ دودھ پر پابندی کے خلاف شہری شاہد اقبال کی درخواست پر سماعت ہوئی۔

درخواست گزار کی طرف سے اشفاق احمد کهرل ایڈووکیٹ پیش ہوئے، انہوں نے عدالت کو بتایا کہ بچپن سے گھر میں فریش دودھ استعمال کر رہے ہیں، ڈی جی فوڈ پنجاب نے نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے فریش دودھ کی فروخت پر پابندی لگا دی۔

اشفاق احمد کهرل نے کہا کہ ریگولیشنز کے تحت 2022 تک پنجاب فوڈ اتهارٹی فریش دودهه کی فروخت پر پابندی نہیں لگ سکتی ہے، فریش دودھ کی فروخت پر پابندی عائد کرنا آئین کے آرٹیکل 8،18، اور 36 کی خلاف ورزی ہے، عدالت فریش دودھ کی فروخت پر پابندی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے۔

جسٹس عابد عزیز شیخ نے تازہ دودهه کی فروخت کیخلاف پنجاب فوڈ اتهارٹی کی کارروائیوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جب قانون میں تازہ دودھ کی فروخت پر کوئی پابندی نہیں ہے تو پهر کارروائیوں کیوں کی جا رہی ہیں، عدالت بادی النظر میں یہ کارروائیاں عام شہریوں اور کاروباری افراد کے بنیادی حقوق کیخلاف ہیں۔

عدالت کی ایڈووکیٹ جنرل پنجاب آفس کو تازہ دودھ کی فروخت بارے قانون پر عملدرآمد کی ہدایت کرتے ہوئے پنجاب فوڈ اتهارٹی سے 10 جون تک جواب طلب کر لیا۔

متعلقہ خبریں