جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پاکستان سمیت دنیا بھر میں عوامی آگاہی کیلئے ماں کے دودھ کا ہفتہ منایا جارہا ہے

ماں کے دودھ

اسلام آباد : ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا ہے کہ ماں کا دودھ نوزائیدہ کو نہ صرف بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے، بلکہ بچے کی نشوو نماء کے لیے بھی اہم ہے۔

دنیا بھر سمیت وزارت قومی صحت عوام میں آگاہی کے لیئے یکم اگست سے سات اگست تک ماں کے دودھ (بریسٹ فیڈنگ) کا ہفتہ منارہی ہے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے اس موقع جاری ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ نوزائیدہ بچوں کی نشو و نما کے لیے ماں کا دودھ بہترین ہے۔ قرآن مجید میں تاکید کی گئی ہے کہ مائیں دو سال تک اپنے بچوں کو دودھ ضرور پلائیں۔

انہوں نے کہا کہ پہلے چھ ماہ تک ماں کا دودھ نوزائیدہ کو نہ صرف بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے، بلکہ بچے کی نشوو نماء کے لیے بھی اہم ہے۔ بریسٹ فیڈنگ بچوں کے ساتھ ساتھ ماؤں کی صحت کے لیے بھی انتہائی اہم ہے۔

یہ بھی پڑھیں : خیبر پختونخوا میں فارمولہ دودھ کی فروخت پر پابندی

ان کا کہنا تھا کہ ماں کا دودھ ذہنی اور جسمانی نشو و نماء کے لیے ضروری ہے۔ فارمولا دودھ یعنی ڈبے والہ دودھ کسی بھی صورت مَاں کے دودھ کا نعمل البدل نہیں۔ یہ بات باعث تشویش ہے کہ پاکستان میں بریسٹ فیڈنگ کی شرح بہت کم ہے۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ بچوں کی نشو و نما اور مستقبل کے لیے ڈبے اور فارمولا دودھ کی بجائے بریسٹ فیڈنگ کو ترجیح دیں۔ وزارت صحت نے صوبائی وزارتوں اور ڈویلپمنٹ پارٹنر کے ساتھ مل کر بریسٹ فیڈنگ سے متعلق اصول طے کر رکھے ہیں۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ کسی خاص وجہ کے بغیر نوزائیدہ کے لیے ڈبے یا فارمولا دودھ تحویز کرنا ناجائز اور قانونی جرم ہے۔ تمام شعبہ میڈیکل سے وابستہ افراد اور ڈاکٹرز ماؤں کو پہلے کم از کم پہلے چھ ماہ تک بریسٹ فیڈنگ لازمی تجویز کریں۔ مائیں بچوں کو دو سال تک اپنا دودھ پلائیں۔

متعلقہ خبریں