چلی : تین ہفتوں سے جاری مظاہروں کے دوران انیس افراد ہلاک

چلی

سینٹیاگو : چلی میں میٹرو ٹرین کرایوں میں اضافے سے شروع ہونے والا احتجاج خونی رنگ اختیار کر گیا۔ تین ہفتوں سے جاری مظاہروں کے دوران انیس افراد ہلاک ہوگئے۔

چلی میں میٹرو ٹرین کے کرایوں میں اضافہ کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ تھم نہ سکا، مظاہرین کا پولیس کے ساتھ تصادم جاری ہے۔

جاری مظاہروں سے معیشت کو ایک ارب ڈالر سے زائد کا نقصان ہو چکا ہے۔ دارالحکومت سینٹیاگو کی سڑکوں پر مظاہرین اور پولیس کا آپس میں پر تشدد تصادم تاحال جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں : عراق میں حکومت مخالف مظاہروں میں شدت، معیشت تباہ ہوگئی : وزیر اعظم

پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے واٹر کینن اور آنسو گیس کے شیلز کی بارش کر دی، مظاہرین نے بھی پولیس پر پتھراؤ کیا اور آتش گیر بم پھینکے۔

مظاہرین حکومت سے ملک میں نیا آئین بنانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔