جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سول اسپتال کوئٹہ : مریضوں سے پیسے لینے پر دو آیا سمیت سات افراد نوکری سے فارغ

مریضوں سے پیسے

کوئٹہ : سول اسپتال کوئٹہ میں مریضوں سے پیسے لینے کا الزام ثابت ہونے پر دو آیا، دو سوٸپرس تین سیکورٹی گارڈز کو نوکری سے فارغ کردیا گیا۔

کوئٹہ کے سول اسپتال کے گاٸنی لیبر روم میں مریضوں سے پیسے لینے سے متعلق انکواٸری رپورٹ جاری کردی گئی ہے۔ انکواٸری کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں ذمہ داران کے خلاف کاررواٸی مکمل کرلی گئی۔

رپورٹ میں اسپتال کی نجی سیکیورٹی کمپنی بھی کوتاہی کی مرتکب قرار دی گئی۔ لیبر روم کی دو آیا، دو سوٸپرس اور نجی سیکورٹی کمپنی کے تین سیکورٹی گارڈز لیبر روم میں مریضوں سے پیسے لینے میں ملوث پائے گٸے، جنہیں معطل کر کے سول اسپتال سے فارغ کر دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : موبائلیں آپس میں ٹکرانے سے رینجرز اور پولیس کے دو دو اہلکار زخمی

ایم ایس سول اسپتال کوٸٹہ کا کہنا ہے کہ ایمرجنسی سروسز میں غفلت قابل برداشت نہیں، بلا امتیاز کاررواٸی جاری رکھیں گے۔ لوگ سرکاری اسپتالوں میں بہتر علاج معالجے کی امید لے کر آتے ہیں، عوامی خدمت میں کوٸی رکاوٹ قابل قبول نہیں ہے۔

سول اسپتال یوں تو اپنی بد انتظامی کے باعث اکثر خبروں کی زینت بنتا ہے مگر یاد رہے کہ اسی سول اسپتال میں ایک ایسی ڈاکٹر بھی تھیں جنہیں بہادری پر آئرن لیڈی کا خطاب دیا گیا تھا۔

سال 2016 میں سِول اسپتال پر حملے کے بعد ویڈیو اور تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں، جن میں ایک خاتون ڈاکٹر کو زمین پر گرے ہوئے زخمیوں کی مدد کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا، اس خاتون کا نام ڈاکٹر شہلا سمیع تھا۔ وہ چند ہی بہادر ڈاکٹرز میں سے ایک تھیں جنہوں نے ایسی صورتحال میں بھی اپنے فرائض کی ادائیگی انجام دی اور زخمیوں کو مدد فراہم کی۔

ڈاکٹر شہلا سمیع اسی سول اسپتال میں گزشتہ سال جولائی 2020 کو دل کا دورہ پڑنے کے باعث دنیا سے رخصت ہوگئیں۔

متعلقہ خبریں