جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

کوکین، آئس اور کرسٹل نشے کے خلاف قانون نہ ہونے کا انکشاف

کوکین، آئس

کراچی : ملک میں کوکین، آئس اور کرسٹل کے خلاف قانون نہ ہونے کے باعث ملزمان  کو سزا نہیں مل پاتی ہے۔

ڈی آئی جی عامر فاروقی نے سندھ اسمبلی کی قائمہ کمیٹی قانون کے اجلاس میں انکشاف کیا کہ کوکین، آئس اور کرسٹل جیسے خطرناک نشے کے خلاف قانون نہیں ہے۔

پولیس حکام کا کہنا تھا کہ آئس کرسٹل اور کوکین کیمیکل نشہ ملزمان سمیت پکڑا جاتا ہے، سزا نہیں ہوتی۔ آئس، کرسٹل کا ایک گرام ہیروئن کے دس گرام سے زیادہ خطرناک ہے۔ ایک گرام آئس کرسٹل پر ملزمان کو سزا کے بجائے ضمانت ہوجاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : آئس نشے کے استعمال میں اضافہ، آئی جی سندھ کا کراچی میں جرائم کی کمی کا دعویٰ

ڈی آئی جی کا کہنا تھا کہ شیشہ نے بھی نوجوان نسل کو تباہ کیا ہے مگر اس حوالے سے بھی قانون نہیں ہے۔

کمیٹی ممبر امین یوسفزئی نے کہا کہ انسداد منشیات قانون میں ترمیم کے لیے وفاق سے رجوع کیا جائے۔ قاسم سراج کا کہنا تھا کہ گٹکا مین پوری نشہ آور اشیاء کی اسمگلنگ کی رقم مجرمانہ سرگرمیوں میں استعمال ہوتی ہیں۔

رکن اسمبلی ہیر سوہو نے ٹھٹھہ میں گٹکے اور مین پوری کی تباہی کا مسئلہ اٹھایا۔

سندھ اسمبلی کی قائمہ کمیٹی نے شیشہ نشے کے خلاف قانون سازی مکمل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

قاسم سراج نے کہا کہ آئس کرسٹل نشہ خطرناک ہے، قانون میں ترمیم ضروری ہے۔

متعلقہ خبریں