جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

عدلیہ مخالف پروگرام سے متعلق توہین عدالت کیس، سوشل میڈیا رولز کیس کے ساتھ منسلک

عدلیہ مخالف پروگرام

اسلام آباد : عدالت نے عدلیہ مخالف پروگرام سے متعلق توہین عدالت کیس کو سوشل میڈیا رولز کیس کے ساتھ منسلک کرنے کی ہدایت کردی۔

نواز شریف کی ضمانت کے بعد عدلیہ مخالف پروگرام کرنے سے متعلق توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی۔ اسلام آباد ہائی کورٹ جرنلسٹ ایسوسی ایشن کی جانب سے کاشف ملک ایڈووکیٹ اور سینئر صحافی اور اینکرپرسن حامد میر عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ حامد میر صاحب آپ اس کیس میں اپنے آپ کو پٹیشنر سمجھیں۔

عدالت نے حکم دیا کہ اٹارنی جنرل سوشل میڈیا رولز پر اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد آگاہ کریں۔ کورٹ رپورٹنگ سے متعلق عدالتی معاونین کو بھی جواب جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : اسلام آباد ہائیکورٹ پر حملہ، 32 وکلاء کے توہین عدالت کیسز کی سماعت کیلئے بینچ کی تشکیل

اٹارنی جنرل نے مناسب مؤقف لیا تھا کہ وہ سوشل میڈیا رولز پر اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کریں گے۔ چیف جسٹس نے ہدایت دی کہ جن اسٹیک ہولڈرز سے ابھی مشاورت نہیں ہوئی ان کو بھی اٹارنی جنرل بلائیں۔ مشاورتی عمل تمام اسٹیک ہولڈرز سے مکمل کریں، بے شک مزید وقت لے لیں۔

عدالت نے سوشل میڈیا رولز سے متعلق کیسز کے ساتھ اس کیس کو بھی منسلک کرنے کی ہدایت کردی۔ صحافیوں کے تحفظ کے لیے پاکستان بار کونسل کی کمیٹی کو بھی نوٹس جاری کردیئے گئے۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت 26 فروری تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ خبریں