جی ٹی وی نیٹ ورک
انٹرٹینمنٹ

کورونا وائرس پر گانا بنانے پر علی ظفر تنقید کا شکار

علی ظفر

کراچی: پاکستان کے نامور اداکار، گلوکار اور راک اسٹار علی ظفر نے رواں ماہ یکم مارچ کو پاکستان سپر لیگ کے لیے "میلہ لوٹ لیا” ایک گانا جاری کیا تھا جس کے بعد گزشتہ روز انہوں نے کورونا وائرس کے لیے بھی ایک گانا جاری کیا۔

علی ظفر نے ماضی کے مشہور گانے ‘کو کو کورینا’ کو تبدیل کرتے ہوئے ‘کو کو کورونا’ گانا تیار کیا جس کی ویڈیو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر شیئر کی۔

گانے کا آغاز میں علی ظفر نے کہا کہ ‘اس وقت تمام انسانیت ایک بہت بڑے بحران سے گزر رہی ہے، جس سے ہم سب کو مل کر لڑنا ہے اور کیسے لڑیں گے یہ آپ کو بھائی بتائے گا’۔

گانے میں انہوں نے مداحوں کو پیغام دیا کہ وہ لوگوں سے ہاتھ ملانے سے گریز کریں جبکہ بھیڑ میں جانے کے بجائے گھر میں رہنے کو ترجیح دیں۔

یہ بھی پڑھیں: علی ظفر کی کورونا وائرس سے بچاؤ کی آگاہی مہم، ویڈیو وائرل

کورونا وائرس کے پیش نظر علی ظفر کا یہ گانا شائقین کا دل جیتنے میں شاید ناکام ہوگیا۔

جہاں شائقین کورونا وائرس کے خوف میں مبتلا ہیں وہیں سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر انہوں نے علی ظفر کو ایسا گانا تیار کرنے پر شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا۔

انہوں نے لکھا کہ ‘زندگی صحیح چل رہی تھی کہ پھر میں نے علی ظفر کا نیا گانا سنا، یہ اتنا عجیب ہے کہ اب میں کسی کو الزام دے سکتی ہوں کہ صبح اٹھ کر مجھے الٹی کیوں آتی ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘کیا کوئی انٹرنیٹ پر علی ظفر پر پابندی عائد کروا سکتا ہے؟’

ان کے مطابق ‘علی ظفر 2020 کی عجیب شخصیات بن چکے ہیں’۔

انہوں نے لکھا کہ ‘کاش علی ظفر 2011 میں اپنا البم جھوم ریلیز کرنے کے بعد گلوکاری چھوڑ دیتے’۔

جہاں لوگوں نے اس گانے پر علی ظفر کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا وہیں کچھ لوگ ایسے بھی تھے جنہیں ان کا یہ گانا پسند بھی آیا۔

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی چوہدری فواد حسین نے علی ظفر کے اس گانے کو ‘زبردست’ قرار دیا۔

اینکر پرسن اقرار الحسن نے بھی اس گانے کی تعریف کی اور لکھا کہ اسے زیادہ سے زیادہ شیئر کرنا چاہیئے۔

واضح رہے کہ دسمبر 2019 میں چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والا کووڈ 19 (نوول کورونا وائرس) دنیا کے تقریباً 156 ممالک تک پھیل چکا ہے اور اس سے دنیا بھر میں ایک لاکھ 56 ہزار 400 سے زائد افراد متاثر ہوئے۔

اس عالمی وبا کے باعث اب تک کم از کم 6 ہزار 513 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جن میں سب سے زیادہ 3 ہزار 99 اموات چین کے صوبے ہوبے میں ہوئیں۔

پاکستان میں بھی کورونا کیسز کی تعداد کم از کم 94 ہوگئی ہے۔

متعلقہ خبریں