جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

چمن میں سختیاں نہ کیں جائیں، اس ملک کو کسی کا باپ نہیں توڑ سکتا : محمود خان اچکزئی

اس ملک کو کسی کا

کوئٹہ : محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ پاکستان کی ساری سیاسی پارٹیاں میوزیکل چیئر پر آگئی ہیں، یہ ملک اب بھی چل سکتا ہے اگر آئین کی بالادستی ہو، اس ملک کو کسی کا باپ نہیں توڑ سکتا ہے۔

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے چیئرمین محمود خان اچکزئی پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ جس طرح سے ہماری جمہوری حکومت کو گرایا گیا، وہ ناقابل فراموش ہے، چمن میں جس طرح سے خاردار تاریں بچھائی جارہی ہیں، افسوس کی بات ہے، کیا آسمان گر پڑا جو آپ نے اس بارڈر پر خار دار تاریں لگائیں؟

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے بھارت سے روز اول سے معاملات خراب رہے ہیں، واہگہ بارڈر سے لاہور تک کوئی چیک پوسٹ نہیں، پھر یہاں کیوں سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہا ہے؟ چمن بھی پاکستان کا حصہ ہے، وہاں سختیاں نہ کی جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ملک ہمارا ہے اس ملک کی عزت کی خاطر ہم نے انگریز کے خلاف اعلان جنگ کیا تھا۔ ہمیں جیلوں میں ڈالا گیا ہم نے اس وقت بھی نہیں کہا کہ ہم نے کسی پر احسان کیا ہے، ہماری پارلیمنٹ عوام کی منتخب نمائندوں کے ہاتھ میں ہونی چاہیئے، پاکستان کی ساری سیاسی پارٹیاں میوزیکل چیئر پر آگئی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : پاک افغان بارڈر پر کشیدگی : سیکورٹی معاملات پر سمجھوتہ نہیں کرسکتے : وزیر داخلہ بلوچستان

محمود خان اچکزئی نے کہا کہ ہمیں یہ ملک لوگوں سے زیادہ پیارا ہے، ہر بندہ وفادار ڈھونڈ رہا ہے، ہٹلر کا تجربہ ناکام ہوچکا ہے، یہ ملک تب تک نہیں چل سکتا جب تک آئین کی بالادستی نہیں ہوگی، یہ ملک رضاکارانہ فیڈریشن ہے، اس ملک کو کسی کا باپ نہیں توڑ سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کرپشن اداروں کی پیدا کردہ ہے۔ ایک قابل خرید بلا کو آپ وزیراعلیٰ اور گورنر بنائیں گے تو یہ ملک اور صوبہ کیسے چلے گا۔ جو بکتا ہے وہ اچھا پاکستانی ہے سوائے نواز شریف اور اس کی بیٹی کے،

ہمیں ایک الگ پشتون اسمبلی چاہیئے، ہم یہاں دوسرے اور تیسرے درجے کے شہری بننے کو تیار نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ لوگوں کی زبان کا احترام ہوگا اور جمہوریت ہوگی تو پاکستان کی سالمیت کی ذمہ داری لوں گا، چاہے لوگ مجھے پھر گولی ہی کیوں نہ ماردیں۔ یہ ملک اب بھی چل سکتا ہے اگر آئین کی بالادستی ہو۔

انہوں نے مزید کہا کہ تمام پارٹیوں سے درخواست کرتے ہیں اقتدار کو گولی مارو اقتدار آنی جانی چیز ہے، اس ملک کی سالمیت کے لئے کام کرو۔

متعلقہ خبریں