جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

یورپی یونین پولیس نے چھ ممالک میں پھیلے منشیات فروشی کے بڑے نیٹ ورک کو ختم کردیا

بڑے نیٹ ورک

یورپی یونین کی پولیس نے یورپ میں ہیروئن کی ایک تہائی سپلائی کو کنٹرول کرنے والے ایک بہت بڑے نیٹ ورک کو ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

یورپی یونین کی پولیس ایجنسی، یوروپول کی جانب سے شروع کردہ آپریشن ڈیزرٹ لائٹ کے دو سال کی طویل تحقیقات کے دوران 30 ٹن سے زائد منشیات ضبط اور چھ یورپی ممالک میں 49 افراد کو گرفتار کرنے کے بعد یورپ کے بڑے منشیات فروشی کے نیٹ ورک کو مکمل طور پر ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

یہ نیٹ ورک یورپ میں ہیروئن کی ایک تہائی سپلائی کو کنٹرول کرتا تھا، ساتھ ساتھ بڑے پیمانے پر منی لانڈرنگ میں بھی ملوث تھا۔ اس آپریشن میں اسپین، فرانس، بیلجیم، نیدرلینڈز اور متحدہ عرب امارات کے حکام نے مل کر کام لیا۔ گرفتار ہونے والوں میں چھ ملزمان ایسے ہیں، جو بین الاقوامی پولیس کو انتہائی مطلوب تھے۔

یہ بھی پڑھیں : فوجی حکومت کا بڑھتا تشدد، امریکہ اور یورپی یونین نے میانمار پر نئی پابندیاں لگا دیں

دوران تحقیقات منشیات اور منی لانڈرنگ کے لیے استعمال کیے جانے والے خفیہ فونز کو ہیک کیا گیا۔ نیدرلینڈز کے راستے جنوبی امریکہ سے درآمد کی جانے والی ہیروئن تحقیقات کا بنیادی مرکز تھی، اور زیادہ تر گرفتاریاں بھی سال 2021 میں وہیں کی گئیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس بڑے نیٹ ورک کی سربراہی برطانوی شخص کر رہا تھا، جو اسپین میں گرفتاری سے بچنے کے بعد دبئی فرار ہو گیا تھا، جہاں سے قیادت کرتا رہا۔ نیدرلینڈز کی منشیات فروشوں کی ایک اور بڑی مچھلی اس وقت متحدہ یو اے ای میں زیر حراست ہے، جس کی حوالگی کے لیئے درخواست کی جائے گی۔

متعلقہ خبریں