ایگزیکٹو کے پاس ذوالفقار علی بھٹو نہیں گئے، آصف زرداری بھی نہیں جائیں گے : لطیف کھوسہ

ایگزیکٹو

اسلام آباد : ذوالفقار علی بھٹو ایگزیکٹو کے پاس نہیں گئے تھے اور موت قبول کی۔ آصف علی زرداری ان کے داماد ہیں ایگزیکٹو کے پاس نہیں جائیں گے۔ زرداری صاحب کو کچھ ہوتا ہے تو عمران خان اور ایگزیکٹو ذمہ دار ہوں گے۔

آصف علی زرداری کے وکیل لطیف کھوسہ نے احتساب عدالت میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے عدالت سے درخواست کی ہے اگر زرداری صاحب زیادہ بیمار ہیں تو کراچی والے ڈاکٹرز کی رائے لے لیں۔ اگر زرداری صاحب کا وہاں علاج ہوتا ہے تو ان کی طبیعت میں مزید بہتری آ جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ لیکن ہماری درخواست کی نیب پراسیکیوٹر نے بہت مخالفت کی۔ زرداری صاحب کی طبیعت اتنی خراب ہے کہ انہیں پمز سے نہیں لایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : آصف زرداری کی کراچی علاج کیلئے منتقلی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

ان کا کہنا تھا کہ نیب نے عدالت کو درخواست دینے پر اعتراض کیا اور کہا ایگزیکٹو کے پاس جائیں۔ ذوالفقار علی بھٹو بھی ایگزیکٹو کے پاس نہیں گئے تھے اور موت قبول کی۔ آصف علی زرداری ان کے داماد ہیں ایگزیکٹو کے پاس نہیں جائیں گے، عدالت میں اپنی درخواست کریں گے۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ ہم باہر جانے یا کسی بیرونی ملک ڈاکٹر سے علاج کا نہیں کہہ رہے ہیں۔ نیب کے تاخیری حربے اذیت پہنچانے کے لیے ہیں۔ زرداری صاحب کو کچھ ہوتا ہے تو عمران خان اور ایگزیکٹو ذمہ دار ہوں گے۔ اسسٹنٹ کمشنر بھی آج عدالت نہیں آئے کہا دھرنے میں مصروف ہوں۔

آصف زرداری کے وکیل نے بتایا کہ زرداری صاحب نے کہا جتنا ظلم کرنا چاہتے ہیں کریں میں اسے برداشت کروں گا۔ زرداری صاحب کا دامن صاف ہے، صرف مفروضوں کی بنیاد پر کیس بنائے گئے ہیں۔ یہ لوگ دھونس دھاندلی سے لوگوں کو کیس میں مدعی بنا رہے ہیں۔