جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سینیٹ الیکشن میں فیصل واؤڈا کی کامیابی کا نوٹیفیکیشن روکنے کی استدعا مسترد

روکنے کی استدعا مسترد

اسلام آباد : الیکشن کمیشن نے فیصل واؤڈا کی سینیٹ الیکشن میں کامیابی کا نوٹیفیکیشن روکنے کی استدعا مسترد کردی ہے۔

الیکشن کمیشن میں فیصل واؤڈا کے خلاف نااہلی کی درخواست پر سماعت ہوئی، جس کی سماعت ممبر پنجاب الطاف ابراہیم کی سربراہی میں ہوئی۔

فیصل واؤڈا الیکشن کمیشن میں پیش ہوگئے، انہوں نے اپنا وکیل تبدیل کرلیا۔ وکیل نے بتایا کہ فیصل واؤڈا اپنی والدہ کی بیماری کے باعث پیش نہیں ہو رہے تھے۔ ہم والدہ کا میڈیکل ریکارڈ ساتھ لائے ہیں۔ ممبر پنجاب نے کہا کہ میڈیکل ریکارڈ کی ضرورت نہیں ہے، آپ نے کہا ہم نے مان لیا۔

درخواست گزار کے مطابق فیصل واؤڈا کو سینیٹر بننے سے روکا جائے۔ ہائی کورٹ نے قرار دیا کہ بادی النظر میں فیصل واوڈا کا حلف نامہ جھوٹا ہے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کی مصدقہ نقل بھی الیکشن کمیشن میں پیش کی گئی۔

الیکشن کمیشن نے فیصل واؤڈا سے ان کے 2018 عام انتخابات کے کاغذات نامزدگی سے متعلق سوالات کیئے۔

یہ بھی پڑھیں : سندھ ہائی کورٹ نے فیصل واؤڈا نااہلی کیس میں اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ طلب کرلیا

فیصل واؤڈا نے کہا کہ یہ ایک سیاسی کیس ہے، جو میرے مخالف وکیل نے باتیں کیں وہ بے بنیاد ہیں۔ الیکشن کمیشن مجھے 2 سو دفعہ بلائے گا میں آؤنگا۔ میری ماں زندگی و موت کی جنگ لڑ رہی ہوگی تو کبھی نہیں آؤنگا۔

ممبر خیبر پختونخوا نے کہا کہ آپ ہمارے سوالات کے جوابات دیں۔ فیصل واؤڈا نے کہا کہ میں اتنا قانونی زبان کو نہیں جانتا، آج آکر تھوڑا قانونی زبان کا علم ہوا۔

ممبر خیبر پختونخوا نے کہا کہ کیا آپ نے کاغذات نامزدگی فارم خود نہیں بھرا تھا یا آپ سوالات کے جوابات نہیں دینا چاہتے؟ جس پر فیصل واؤڈا نے کہا کہ میری کیس کے حوالے سے بالکل تیاری نہیں، آج جواب نہیں دے سکتا۔ اگر آئندہ بلائیں گے تو حاضر ہوکر جواب دے دونگا۔

درخواست گزار نے فیصل واؤڈا کے سنیٹ سے کامیابی کا نوٹیفکیشن روکنے کی استدعا کی۔ ممبر پنجاب نے کہا کہ نوٹیفکیشن کیوں روکیں، نمائندگی فیصل واؤڈا کا حق ہے۔ انہوں نے خود کہا کہ وہ اگلی سماعت میں پیش ہوکر جواب دینگے۔

ممبر پنجاب نے فیصل واؤڈا کے وکیل سے استفسار کیا آپ کو سندھ ہائیکورٹ جاکر کیا فائدہ ہوا؟ آپ اپنے مؤکل کو مشورہ تو اچھا دیتے۔

الیکشن کمیشن نے فیصل واؤڈا کے نااہلی کیس کی سماعت 18 مارچ تک ملتوی کردی۔

متعلقہ خبریں