جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

وفاقی حکومت چیئرمین نیب کو آرڈیننس کے ذریعے توسیع دیں گے : مراد علی شاہ

چیئرمین نیب کو آرڈیننس

اسلام آباد : وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ ملک میں کورونا کی صورتحال انتہائی خراب ہے، وفاقی حکومت چیئرمین نیب کو بھی آرڈیننس کے ذریعے توسیع دے دیں گے۔

احتساب عدالت اسلام آباد میں سندھ نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس کی سماعت ہوئی۔ جج سید اصغر علی نے کیس کی سماعت کی۔

وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔ دوران سماعت ملزم محمد علی کی وارنٹ کی تعمیلی رپورٹ عدالت میں پیش ہوئی۔

ملزم محمد علی کیخلاف سیکشن 87 کے تحت اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کردی گئی۔ ریفرنس میں شریک ملزمان کی جانب سے ضمانتی مچلکے عدالت میں جمع کرادیئے گئے ہیں۔

عدالت نے ملزمان کو حاضری لگا کر جانے کی اجازت دے دی، کیس کی سماعت 8 جون تک ملتوی کردی گئی۔

پیشی کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا وزیراعلی سندھ نے کہا کہ ڈی جی نیب کو آرڈیننس سے مدت ملازمت سے توسیع دی گئی۔ چیئرمین نیب کو بھی یہ آرڈیننس کے ذریعے توسیع دے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مجھ پر تو شوگر کمیشن کیس بھی کھولا گیا۔ سندھ میں جہانگیر اور خسرو بختیار کو زیادہ سبسڈی ملی۔ اومنی گروپ تو سبسڈی لینے میں تیسرے نمبر پر ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کا فیصلہ حیران کن تھا۔ ہم نے الیکشن کمیشن کا فیصلہ تسلیم کیا۔ گنتی جب چل رہی تھی اس دوران کہیں بھی کوئی شکایت نہیں تھی۔

ہم تو خوش تھے خوش اسلوبی سے این اے 249 کا الیکشن ہوگیا۔ آراو گراؤنڈ پر موجود ہوتے ہیں، انہوں نے سارا دن دیکھا تھا۔ انہوں نے ری کاونٹنگ نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ الیکشن کمیشن کا فیصلہ آر او کے فیصلے سے مختلف آیا۔

یہ بھی پڑھیں : عمران خان مہنگائی مافیا کے سرغنہ ہیں : بلاول بھٹو زرداری

وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ آرڈیننس کی زندگی چار مہنیے کی ہوتی ہے۔ مجھے نہیں لگتا کہ الیکشن آرڈیننس دونوں ہاؤس سے منظور ہوگا۔ الیکشن پراسیس میں اصلاحات کی ضرورت ہے۔ 2017 میں نیا الیکشن لاء بنا، تب بھی الیکٹرانک ووٹنگ کی بات ہوئی تھی۔ یہ فیصلہ ہوا تھا کہ الیکٹرانک ووٹنگ شاید حل نہ ہو۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ہر چیز میں وزیروں کے ایک دوسرے کے ساتھ تضادات آرہے ہیں۔ پی ٹی آئی کے ایک وزیر چاند دیکھتے ہیں اور ایک وزیر آکر کہتے ہیں کہ یہ میرا کام نہیں۔ اب پی ٹی آئی نے میٹر بھی بنا لیا کہ ایس او پی پر کتنا عمل درآمد ہو رہا ہے۔ ہمیں بھی بتا دیں کیسے ناپتے ہیں، ہم بھی پھر کر لیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں نے این سی سی میں کہا تھا کہ بین الصوبائی ٹرانسپورٹ بند کرنی چاہیے۔ پوری دنیا نے فلائٹس بند کردیں۔

ہمارے ملک سے دنیا میں کہیں بھی جائیں تو چودہ دن آئیسولیشن میں رہنا ہو گا۔ سندھ میں کورونا کی صورتحال کوئی زیادہ اچھی نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وائرس کے دوران کراچی سے پچاس بندوں کو پیشی کیلئے بلا لیا جاتا ہے۔ ایک چھوٹے سے کمرے میں پچاس بندہ کھڑا ہے تو یہ کورونا روکنے کا طریقہ نہیں ہے۔ میں جس فلائٹ میں اسلام آباد آیا وہ پوری بھری ہوئی تھی۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ ہم نے سندھ اسمبلی کا سیشن آن لائن کر دیا ہے۔ اسمبلی میں 25 فیصد سے زائد ارکان کو آنے کی اجازت ہی نہیں ہے۔ ہم نے کورونا سے بچنے کیلئے احتیاط کرنی ہوگی۔

متعلقہ خبریں