جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

وفاقی وزیر علی زیدی کی چیف سیکریٹری سندھ کے خلاف توہین عدالت کی درخواست

وفاقی وزیر علی

کراچی : وفاقی وزیر علی زیدی نے سانحہ بلدیہ، لیاری گینگ وار کی جے آئی ٹی رپورٹ عام کرنے کیلیئے توہین عدالت کی درخواست دائر کردی۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے سانحہ بلدیہ، لیاری گینگ وار کے عذیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹی عام نہ کرنے پر چیف سیکریٹری سندھ کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کردی ہے۔

علی زیدی نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ سندھ ہائیکورٹ نے جنوری میں تینوں اہم جے آئی ٹیز پبلک کرنے کا حکم دیا تھا۔ عدالتی حکم کے باوجود چیف سیکریٹری سندھ نے تینوں اہم جے آئی ٹیز پبلک نہیں کیں۔ عدالتی حکم پر عمل درآمد نہ کرنے پر عدالت کی کارروائی کی جائے۔

یہ بھی پڑھیں : عزیر بلوچ اور بلدیہ کیس کی جے آئی ٹی پبلک کرنے کی درخواست پر سماعت

درخواست میں کہا گیا ہے کہ لیاری گینگ وار کے سرغنہ عذیر بلوچ نے بھی دہشت گردی اور دیگر سنگین وارداتوں میں اہم شخصیات کے ملوث ہونے کا اعتراف کیا تھا۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عذیز بلوچ، نثار مورائی کی جی آئی ٹیز پبلک ہونی چاہیئے، جی آئی ٹیز میں جن لوگوں کے نام تھے وہ آج بھی سیاست کرتے ہیں۔ اگر جی آئی ٹیز جھوٹی نہیں تو منظر عام پر لائیں جائیں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت عدالت میں جی آئی ٹیز پبلک کرنے کی مخالفت کرتی رہی۔  جی آئی ٹی کے مطابق بلدیہ فیکٹری سانحہ حادثہ نہیں بلکہ دہشت گردی تھی۔ ملزمان بھی پکڑے گئے لیکن ان کی رہنماء آج بھی اسمبلی میں سیاست کر رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں