جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

ایف آئی اے میں پیشی، اکاؤنٹ میں پیسے دفاتر کے اخراجات کیلئے آئے : شاہ فرمان

دفاتر کے اخراجات

پشاور : سابق گورنر کا کہنا ہے کہ میرے نام پر پی ٹی آئی اکاؤنٹ میں پیسے صوبائی دفاتر کے اخراجات کے لیئے آتے تھے۔

سابق گورنر خیبر پختونخوا شاہ فرمان وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) میں پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی تحقیقات کے لیئے پیش ہوگئے، انہیں سوالنامہ دے دیا گیا ہے۔ تین رکنی ٹیم انکوئری کر رہی ہے۔

پیشی کے بعد شاہ فرمان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں سمجھتا ہو نیب کے ساتھ جو کیا گیا، وہ کسی اور ادارے کے ساتھ نہ ہو۔ ایف آئی اے کو عزت دینے کے لئے آیا ہوں۔ 26 ارب روپے ثابت کرکے فرد جرم عائد کرنے کے دن ایک پرائم اور ایک چیف منسٹر بنا۔

یہ بھی پڑھیں : آپ کو جوابدہ ہوں نہ ہی معلومات فراہم کرنے کا پابند ہوں : عمران کا ایف آئی اے کو نوٹس پر جواب

انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے کے آفیسرز کو خراب تحسین پیش کرتا ہوں۔ مجھے ایک اکاؤنٹ کھولنے کے لیے بلایا گیا ہے۔ پی ٹی آئی نے صوبائی دفاتر کے اخراجات ریکارڈ پر لانے کے لئے اکاونٹ کھولا۔ یہ اکاؤنٹ کسی شہباز شریف کا نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جس بندے نے اس اکاؤنٹ میں پیسے ڈالے، اسی بندے نے کیس دائر کیا ہے۔ گزشتہ 5 سال میں اس اکاؤنٹ میں صرف 20 لاکھ روپے آئے ہیں۔ اکبر ایس بابر نے سب سے پہلے اس میں پیسے جمع کئے اور اسی نے کیس دائر کیا ہے۔

سابق گورنر نے کہا کہ اس اکاونٹ میں صرف 45 ہزار روپے ماہانہ آتے تھے۔ مستقبل میں جب بڑے بڑے چور پکڑے جائیں گے، تو میں یاد آؤں گا۔ ہم نے قوم کا پیسہ اکاؤنٹ میں جمع نہیں کیا۔

متعلقہ خبریں