او آئی سی کا اجلاس طلب؛ شاہ محمود قریشی خصوصی شرکت کریں گے

 اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا پریس کا نفرنس کے دوران ان کا کہنا تھا کہ او آئی سی کا ہنگامی اجلاس 22 مارچ کو طلب کرلیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق شاہ محمود قریشی کا  کہناتھا کہ 22 مارچ کو ہنگامی اجلاس ترکی کے شہر استنبول میں کیا جائے گا۔ اس اجلاس کا مقصد یہ ہے کہ مسلم امہ کو واقعے کے بعد اکھٹا کرنا ہے، اسلام فوبیا کو روکنے کے لیے مسلمان ممالک کے کردار پر بات ہوگی جس میں او آئی سی اجلاس میں میں خود شرکت کروں گا۔

 وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ نیوزیلینڈ پر امن ملکوں میں سے ایک ہے۔ کرائسٹ چرچ میں دونوں مساجد پر حملوں میں 50 افراد شہید ہوئے۔ جبکہ جس نے حملہ کیا اس کا تعلق آسٹریلیا سے ہے۔ نیوزی لینڈ کے واقعے میں کل 10 پاکستانی متاثر ہوئے۔ جبکہ ہمارا ایک شہری شدید زخمی حالت میں اسپتال میں زیرعلاج ہے۔ اس وقت ہمارے ڈپٹی ہائی کمشنر کے ساتھ ہمارے سفیر کرائسٹ چرچ میں موجود ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اس کے علاوہ شہید اور زخمیوں کی پاکستان میں خاندانوں سے بھی رابطے ہوچکے ہیں۔ لاشوں کی شناخت مشکل مرحلہ تھا جو مکمل ہو چکا ہے۔ جاں بحق افراد کی میتیں پیر کو ان کے خاندان والوں کے حوالے کی جائیں گی۔ان کا کہنا تھا کہ نعیم راشد کو یوم پاکستان کے موقع پر ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔ وزیراعظم نے فیصلہ کیا کہ واقعے پر پیر کو سوگ کے طور پر پاکستان کا پرچم سرنگوں رہے گا۔

نیشنل ایکشن پلان سے متعلق شاہ محمود قریشی نے کہا کہ قومی سلامتی کا معاملہ سیاست سے بالاتر ہے۔ نیشنل ایکشن پلان پر قومی اتفاق رائے پیدا کرنے کی کوشش کریں گے۔