جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

موت قریب سے دیکھی ہے جیل سے نہیں ڈرتا، آخری گیند تک لڑوں گا: عمران خان

عمران خان

لاہور: عمران خان کا کہنا ہے کہ موت قریب سے دیکھی ہے جیل سے نہیں ڈرتا، یہ کتنے لوگوں کو جیل میں ڈالیں گے، آخری گیند تک لڑوں گا، چوروں کی غلامی قبول نہیں کروں گا۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 26 سال پہلے اپنی جماعت کا نام انصاف کی تحریک رکھا، سیاست میں آنے کے بعد کئی چیزوں کی نشاندہی کی، جن ممالک میں قانون کی بالادستی ہو وہ خوشحال ہیں، انصاف کا مطلب کمزور اور طاقتور سب برابر ہیں، جنگل کے قانون کو معاشرے میں بنانا ری پبلک کہا جاتا ہے، لوگوں کو اب کئی چیزیں سمجھ آنا شروع ہوگئی ہیں، موجودہ سیٹ اپ تباہی کی طرف لے کر جارہا ہے، جو قومیں طاقتور کیلئے الگ قانون بناتی ہیں وہ تباہ ہوجاتی ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ میرے لیے وزارت عظمیٰ کی کوئی اہمیت نہیں، سازش کے تحت مجھے حکومت سے باہر نکالا گیا، آج قوم ایک بہت خطرناک موڑ پر کھڑی ہے، طاقتور ڈاکوؤں نے 1100 ارب روپے کے کیسز معاف کرالیے، پی ڈی ایم نے ملک کو تباہی کی طرف دھکیل دیا، کرپشن کیسز معاف کراکے ملک کو دلدل میں دھکیل دیا گیا، ابھی تو ملک میں مزید مہنگائی آنے والی ہے، جب ہماری حکومت گئی تو 65روپے کلو آٹا تھا آج 135 ہے، کسانوں سے پوچھیں جنہوں نے 7ارب روپے یوریا پر اضافی خرچ کیے، کیا وجہ ہے آج بجلی کے بل دوگنا ہوگئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کرسکتی: عمران خان

ان کا کہنا تھا کہ فواد چودھری کو کیوں پکڑا اس کا کیا جرم ہے، چیف الیکشن کمشنر پر تنقید پر کون گرفتار ہوتا ہے، اعظم سواتی کو ایک ٹوئٹ کرنے پر گرفتار کیا گیا، ارشد شریف کو قتل اور مجھے پر قاتلانہ حملہ کیا گیا، قانون اور انصاف کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں، عوام کی انصاف کے نظام سے امید ختم ہورہی ہے، پڑھا لکھا طبقہ بیرون ملک جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ موت قریب سے دیکھی ہے جیل سے نہیں ڈرتا، کسی کو جیل سے ڈرنا نہیں چاہیے، یہ کتنے لوگوں کو جیل میں ڈالیں گے، آخری گیند تک لڑوں گا، چوروں کی غلامی قبول نہیں کروں گا، آئین کے مطابق 90 روز میں الیکشن کرانے ہیں، آج ملک میں کسی سے پوچھ لیں معیشت کا کیا حال ہے، محسن نقوی کی تقرری سے واضح ہوگیا یہ الیکشن نہیں کرانا چاہتے۔

متعلقہ خبریں