جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

آئی ایم ایف 6 ارب ڈالر ہمارے منہ پر مارتا ہے مگر دیتا نہیں: شاہد خاقان

شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد: شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ معیشت کی چابی آئی ایم ایف و دیگر اداروں کے حوالے کررہے ہیں، آئی ایم ایف 6 ارب ڈالر ہمارے منہ پر مارتا ہے مگر دیتا نہیں۔

رہنما مسلم لیگ (ن) شاہد خاقان عباسی کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ منی بجٹ سے بھی زیادہ خطرناک بل ہے، رات کے اندھیرے میں بحث کیے بغیر بل پاس کرایا گیا، اس حکومت کا ہر وزیر یہی کہتا ہے کہ ہم مجبور ہیں اختیار نہیں، حکومت کے وزیر مجبور ہیں تو اپوزیشن کو بات کرنے دیں، ایسے بل کا دفاع کیوں کرر ہے ہیں جو ملک مفلوج کردے گا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ملکی معاشی حالات پر پارلیمان پر بحث نہیں ہوتی، ہم نے اسپیکر سے کہا اس معاملے پر بحث ہونی چاہیئے، ہر روز نجی محفلوں میں کہتا ہے آئی ایم ایف کے ہاتھوں مجبور ہیں، انہیں آئین اور قانون کی کوئی پرواہ نہیں ہے، ان معاملات پر بحث لازمی ہے تاکہ حقائق عوام کو پتہ چلے۔

یہ بھی پڑھیں: صدر اور وزیراعظم بیرون ملک کمپنیاں چلا رہے ہیں، عدالتیں خاموش ہیں : شاہد خاقان

ان کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف بھی یہ بات سن لے یہ بل ریورس کیے جائیں گے، قومی اسمبلی میں عجلت میں بل منظور کرایا گیا، معیشت کی چابی آئی ایم ایف و دیگر اداروں کے حوالے کر رہے ہیں، قرضے لینے کے لیے ملکی معیشت کسی اور کے حوالے کر رہے ہیں، آئی ایم ایف 6 ارب ڈالر ہمارے منہ پر مارتا ہے مگر دیتا نہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان آج دنیا میں مہنگائی میں پہلے نمبر پر ہے، افسوس ہے عوام کی پروا نہیں بلکہ انہیں آئی ایم ایف کی پروا ہے، اسٹیٹ بینک کا بل آئی ایم ایف کے حق میں ہوسکتا ہے مگر ملک کے حق میں نہیں۔

متعلقہ خبریں