جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

بھارت افغانستان میں امن نہیں چاہتا، اپوزيشن جماعتوں کو بھارتی سازشوں کو سمجھنا چاہيے : وزیر خارجہ

جماعتوں کو بھارتی

اسلام آباد : شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ میں نے پہلے بھی سلیپر سلز کے متحرک ہونے کا عندیہ دیا تھا، اپوزيشن جماعتوں کو بھارتی سازشوں کو سمجھنا چاہيے۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ آپ جانتے ہیں کہ کچھ قوتیں پاکستان میں استحکام نہیں دیکھنا چاہتیں ہیں، جب بھی پاکستان استحکام کی جانب بڑھتا ہے یہ قوتیں رخنہ اندازی کرتی ہیں۔ جب ہم کشمیر کے مسئلے کو اٹھاتے اور معیشت کو آگے بڑھانے لگتے ہیں تو یہ قوتیں عدم استحکام کیلئے حرکت میں آجاتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں نے پہلے بھی سلیپر سلز کے متحرک ہونے کا عندیہ دیا تھا، ہميں حالات کو سنجيدگی سے سمجھنا ہوگا، اپوزيشن نے ہماری باتوں پر توجہ نہيں دی، مقبوضہ کشمير کی صورتحال کو سمجھنا ہوگا، اپوزیشن کو خطے کی صورتحال سے آگاہ کرنا چاہتا تھا لیکن اپوزيشن نے بجٹ پر توجہ رکھی۔

یہ بھی پڑھیں : وزیراعظم کا کشمیر سے بھارتیوں کو ڈومیسائل اجراء کے خلاف اقوام متحدہ سے رابطہ

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن سے بھارت کی اہمیت کم ہوجائے گی، بھارت افغانستان میں امن نہیں چاہتا، اپوزيشن جماعتوں کو بھارتی سازشوں کو سمجھنا چاہيے۔ بھارت کوچين سے منہ کی کھانا پڑی۔ بھارت اپنے عوام کي توجہ پاکستان کي طرف موڑنا چاہتا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بلاول بھٹو نے قياس آرائيوں سے کام ليا، بلاول کی تقرير بچپنا لگتی ہے، بلاول بھٹو کی تنقيد ن ليگ نے ہضم کرلی ۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ اپوزيشن کا کام تنقيد کرنا ہے، اپوزيشن نے وزير اعظم کے اسمارٹ لاک ڈاؤن پر تنقيد کی۔ ن ليگ کا ايجنڈا عمران خان سے چھٹکارہ ہے۔

متعلقہ خبریں