جی ٹی وی نیٹ ورک
انٹرٹینمنٹ

مالی مشکلات کے باعث ڈپریشن کا شکار بھارتی اداکارہ کی خودکشی

بھارتی

بھارتی شوبز انڈسٹری شخصیات اور خصوصی طور پر اداکاروں و اداکاراؤں کی جانب سے خودکشی کیے جانے کے رواج میں ہر گزرتے سال اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

عام طور پر بھارتی شوبز انڈسٹری میں مالی مسائل کی وجہ سے اداکار ڈپریشن کا شکار ہوجانے کے بعد خودکشی پر مجبور ہوتے ہیں، تاہم بعض واقعات میں مالی مشکلات نہ ہونے کے باوجود اداکار اپنی زندگی ختم کرنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔

جس طرح گزشتہ سال جون میں اداکار سشانت سنگھ کی خودکشی نے بھارتی فلم انڈسٹری کو ہلا کر رکھ دیا تھا، اسی طرح اب کنڑ شوبز انڈسٹری کی ابھرتی ہوئی اداکارہ جے شری رمیا کی خودکشی نے انڈسٹری کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔

بھارتی اخبار انڈین ایکسپریس کے مطابق ابھرتی ہوئی اداکارہ جے شری رمیا کی پھندے سے لٹکی ہوئی لاش بنگلورو میں ان کی رہائش گاہ سے ملی۔

ریاست کرناٹکا کے شہر بنگلورو کی پولیس نے تصدیق کی کہ جے شری رامیا نے پھندے سے لٹک کو خودکشی کرلی۔

اسی حوالے سے انڈیا ٹوڈے نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ پولیس کے مطابق اداکارہ نے 24 اور 25 جنوری کی درمیانی شب کو پھندے سے لٹک کر خودکشی کی، تاہم ان کی لاش 25 جنوری کی صبح کو برآمد کی گئی۔

پولیس نے ابتدائی طور پر ہی اداکارہ کو قتل کیے جانے کے شبہات کو ختم کردیا اور بتایا کہ اداکارہ کئی ماہ سے ڈپریشن کا شکار تھیں۔

کنگنا رناوت کا کامیاب تاریخی ڈرامہ فلم ’منی کارنیکا

جے شری رمیا کنڑ ڈراموں اور فلموں سمیت ویب سیریز میں بھی دکھائی دیتی تھیں، وہ بگ باس کنڈا کے سیزن تھری میں بھی شریک ہوئی تھیں۔

جے شری رمیا نے گزشتہ برس کورونا کے دوران لگائے جانے والے لاک ڈاؤن کے دوران ابتدائی طور پر مداحوں کو ڈپریشن سے آگاہ کیا تھا اور انہوں نے فیس بک لائیو کے دوران بتایا تھا کہ وہ کس قدر پریشان ہیں۔

اگرچہ اس وقت اداکارہ نے مالی مشکلات کا اظہار نہیں کیا تھا، تاہم خود پر ہونے والی بے جا تنقید اور سوشل میڈیا پر تضحیک کا نشانہ بنائے جانے پر وہ پریشان تھیں۔

بعد ازاں انہوں نے 2020 کے آخر میں ایک بار پھر فیس بک لائیو کے دوران مداحوں سے ڈپریشن پر کھل کر بات کرتے ہوئے بتایا تھا کہ اب وہ مالی مشکلات کا شکار بھی ہوگئیں اور انہیں کافی عرصے سے کوئی کام نہیں ملا۔

50 کروڑ روپے ہرجانے کا کیس؛ علی ظفر کو 15 فروری کو جواب جمع کرانے کی ہدایت

اداکارہ نے مداحوں سے بات کرتے ہوئے بتایا تھا کہ وہ ڈپریشن سے جنگ نہیں لڑ سکتیں اور انہیں بعض اوقات مرنے کی شدید خواہش ہوجاتی ہے۔

اداکارہ نے بعد ازاں دونوں فیس بک ویڈیوز ڈیلیٹ کردی تھیں اور بتایا تھا کہ وہ اپنی ڈپریشن پر قابو پانے کی کوشش کریں گی، تاہم اب ان کی خودکشی کی خبر نے ان کے مداحوں کو رلا دیا۔

جے شری رمیا سے قبل گزشتہ برس بھارتی شوبز انڈسٹری کی کم از کم نصف شخصیات نے ڈپریشن کے باعث خودکشی کرلی تھی۔

گزشتہ برس خودکشی کرنے والی شخصیات میں سشانت سنگھ راجپوت سمیت ان کی خاتون منیجر اور دیگر اداکار بھی شامل ہیں۔

گزشتہ برس ستمبر میں ابھرتے ہوئے اداکار 26 سالہ اکشت اتکرش اور ان سے قبل معروف تامل اداکارہ 26 سالہ شراونی کونڈاپلی نے جنسی ہراساں کیے جانے پر خودکشی کرلی تھی۔

شراونی کونڈاپلی سے قبل 7 اگست کو بھوجپوری فلموں کی مقبول اداکارہ 40 سالہ انوپما پھاٹک نے بھی خودکشی کی تھی۔

بھارت میں اس سے قبل بھی متعدد اداکار، گلوکار اور فیشن سے وابستہ افراد بھی خودکشیاں کر چکے ہیں۔

 

متعلقہ خبریں