جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

ننھے احسن کی ہلاکت: مقابلے میں ملوث اہلکار بچے کی ہلاکت سے ایک گھنٹے تک لاعلم رہے

کراچی: صفورا چورنگی پر پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان مبینہ مقابلے میں ملوث گرفتار اہلکاروں نے بیان دیا کہ انہیں واقعے کی اطلاع ایک گھنٹے بعد ملی، پولیس کا مؤقف ہے کہ فرانزک رپورٹ آنے کے بعد واضح ہوگا کہ گولی ڈاکوؤں کی لگی یا پولیس کی.

تفصیلات کے مطابق گزشتہ رات صفورا چورنگی پر پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان مبینہ مقابلے میں ملوث گرفتار اہلکاروں نے ابتدائی بیان میں انکشاف کیا ہے کہ وہ مقابلے کے ایک گھنٹے بعد تک بچے کی ہلاکت سے لاعلم تھے۔

گرفتار اہلکاروں کے بیان کے مطابق گزشتہ روز موسمیات کے قریب 2 موٹر سائیکل پر سوار 4 اہلکار اسنیپ چیکنگ میں مصروف تھے۔

بیان کے مطابق ایک شہری نے اہلکاروں کو موٹر سائیکل پر سوار فرار ہونے والے ڈکیتوں کی اطلاع دی، اہلکاروں نے موسمیات سے صفورا چورنگی تک ڈکتیوں کا پیچھا کیا۔

فائرنگ کرنے والے ڈکیت صفورا چورنگی سے ملیر کینٹ کی جانب فرار ہوئے ہوگئے، اہلکاروں نے مقابلے کی اطلاع تھانے کو دی اور واپس اپنے پوائنٹ پر چلے گئے۔

گرفتار اہلکاروں کے بیان کے مطابق اہلکاروں نے 8 بجے تھانے جاکر شفٹ تبدیل کی اور گھر روانہ ہوگئے، ساڑھے 8 بجے پولیس کو بچے کی ہلاکت کا علم اسپتال سے ہوا۔

پولیس نے جائے وقوعہ سے 30 بور کا 1 خول تحویل میں لیا ہے، جسے فرانزک ٹیسٹ کے لیے لیب بھیج دیا گیا ہے، مبینہ طور پر ڈکیتوں کی جانب سے 30 بور اسلحہ استعمال کیا گیا۔

پولیس کے مطابق ابھی واضح نہیں کہ بچے کو پولیس اہلکار کی گولی لگی ہے یا ڈاکوؤں کی لگی ہے، فرانزک رپورٹ آنے پر صورتحال واضح ہوگی۔

متعلقہ خبریں