جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

اسلام آباد ہائی کورٹ کے زرتاج گل اور امین اسلم سمیت دیگر کو توہین عدالت کے نوٹس

زرتاج

اسلام آباد : عدالت نے زرتاج گل، امین اسلم، وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کے ممبران اور سیکریٹری موسمیاتی تبدیلی کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں وائلڈ لائف بورڈ کی سی ڈے اے کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ عدالت نے وزیر مملکت موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل، وزیر اعظم کے معاون خصوصی امین اسلم، وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کے ممبران، سیکریٹری موسمیاتی تبدیلی ناہید درانی کو توہین عدالت کا شوکاز نوٹس جاری کردیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں سماعت کے دوران ڈپٹی اٹارنی جنرل کی شوکاز نوٹس جاری نہ کرنے کی استدعا بھی مسترد کردی گئی۔

سیکریٹری موسمیاتی تبدیلی نے کہا کہ تمام ذمہ داری قبول کرتی ہوں، کابینہ ارکان کا اس معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے، عدالت نے ریمارکس دئیے کہ کابینہ نے وائلڈ لائف بورڈ کی منظوری دی تھی، ذمہ دار بھی وہ ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : اسلام آباد ہائی کورٹ کا زرتاج گل اور امین اسلم کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کا فیصلہ

چیف جسٹس نے سیکریٹری ماحولیاتی تبدیلی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کی وزارت کو تو جانوروں کی درآمد بند کرنا چاہیے، عدالت کو اچھا نہیں لگتا کہ بار بار آپ کو یہاں بلائیں، جب اچھا ہوتا ہے تو ہر کوئی کریڈٹ لینا چاہتا ہے، ذمہ داری لینے کو کوئی تیار نہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ شروع سے ہی یہ عدالت دیکھ رہی کہ یہاں پر سیاست بہت ہے، کیا آپ چاہتی ہیں کہ یہ عدالت وزیراعظم کو شوکاز نوٹس جاری کرے، اس معاملے پر تو وزیر اعظم کو پتہ ہی نہیں کہ ہو کیا رہا ہے ، عدالت وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کے ممبران کو شوکاز نوٹس جاری کرے گی۔

سیکریٹری ماحولیاتی تبدیلی نے کہا کہ اس سارے واقعے کی اگر کوئی ذمہ دار ہے تو میں ہوں، بعدازاں کیس کی سماعت 27 اگست تک ملتوی کردی گئی۔

متعلقہ خبریں