اسلام آباد ہائیکورٹ: پٹیشنر سلمان صفدر ملزم کے وکیل کو اعانت فراہم کرسکتے ہیں

پرویز مشرف

اسلام آباد: ہائیکورٹ نے پرویز مشرف کے خلاف خصوصی عدالت کو فیصلے سنانے سے روکنے کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے۔ عدالت نے حکم دیا کہ وفاقی حکومت پراسیکیوٹر یا پراسیکیوشن ٹیم کا نوٹیفکیشن پانچ دسمبر سے پہلےجاری کرے۔

ہائیکورٹ نے پرویز مشرف کے خلاف خصوصی عدالت کو فیصلے سنانے سے روکنے کا تفصیلی فیصلہ جاری کیا اور کہا کہ فاضل عدالت پراسیکیوٹر یا پراسیکیوشن ٹیم اورملزم کے وکیل کو سننے کے لیے تاریخ مقرر کرے گی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے تفصیلی فیصلہ 24 صفحات پر مشتمل ہے۔

ہائیکورٹ نے تفصیلی میں کہا کہ وفاقی حکومت پراسیکیوٹر یا پراسیکیوشن ٹیم کا نوٹیفکیشن 5 دسمبر سے پہلے جاری کرے، فاضل عدالت پراسیکیوٹر یا پراسیکیوشن ٹیم اور ملزم کے وکیل کو سننے کیلئے تاریخ مقرر کرے گی۔

ہائیکورٹ نے کہا کہ فریقین عدالت کے سامنے کوئی بھی قانونی یا مبنی بر حقائق معاملہ پیش کر سکتے ہیں، فاضل عدالت فئیر ٹرائل کے اصول کو مدنظر رکھتے ہوئے سماعت جلد مکمل کرے گی۔

پٹیشنر سلمان صفدر چاہیں تو ملزم کے وکیل کو اعانت فراہم کر سکتے ہیں، حیران کن طور پر وفاقی حکومت نے موقف اختیار کیا کہ خصوصی عدالت کی تشکیل می سنگین قانونی سقم ہیں۔ وفاقی حکومت کے مطابق شکایت کنندہ مجاذ شخص نہیں تھا۔