جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

اسلام آباد ہائی کورٹ : پائلٹ کے جعلی لائسنس کے معاملے پر معاونت کے لیئے اٹارنی جنرل طلب

معاونت کے لیئے

اسلام آباد : عدالت نے پائلٹ کے جعلی لائسنس کے معاملے پر معاونت کے لیئے اٹارنی جنرل کو طلب کرلیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں جعلسازی سے لائسنس حاصل کرنے کے الزام پر برطرف پائلٹ سید ثقلین اختر کی لائسنس منسوخی اور ملازمت سے برطرفی کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے درخواست پر سماعت کی۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر اٹارنی جنرل کو عدالتی معاونت کی ہدایت کی۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ اٹارنی جنرل کو کہا تھا حکومت سے ہدایات لے کر عدالت کو آگاہ کریں۔ اسسٹنٹ اٹارنی جنرل نے کہا کہ عدالت مختصر وقت کی مہلت دے اٹارنی جنرل کو عدالتی حکم کے حوالے سے آگاہ کردوں گا۔

یہ بھی پڑھیں : ایتھوپین ایئر لائن کی پائلٹس کے جعلی لائنسز کے معاملے پر سی سی اے سے وضاحت طلب

چیف جسٹس نے کہا کہ اس سے بڑا مسئلہ کیا ہو سکتا ہے کہ دو سال سے ڈی جی سول ایوی ایشن اتھارٹی کی تعیناتی نہیں ہوئی۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی اہم ادارہ ہے جو کمرشل پائلٹس کو لائسنس جاری کرتا ہے۔

عدالت نے اٹارنی جنرل کو معاونت کے لیے طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 23 ستمبر تک ملتوی کردی

درخواست گزار نے مؤقف اپنایا کہ پی آئی اے نے مجھے سنے بغیر 21 جولائی کو ملازمت سے برطرف کر دیا۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے لائسنس معطلی اور منسوخی کے لیے قواعد کی خلاف ورزی کی۔

متعلقہ خبریں